Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

ضابطہ اخلاق کی آڑ میں سوشل میڈیا پر قدغن جبر اور خلافِ آئین ہے۔ دردانہ صدیقی


کراچی17فروری: جماعت اسلامی پاکستان حلقہ خواتین کی مرکزی قیمہ دردانہ صدیقی کا کہنا ہے کہ اظہار رائے انسان کا بنیادی حق ہے جو پاکستان کے آئین نے بھی شہریوں کو دیا ہے، سوشل میڈیا  اپنے خیالات کے اظہار کا ایک پلیٹ فارم ہے جس پر قدغن لگا کر حکومت لوگوں سے اظہار رائے کی آزادی کا حق چھیننا چاہتی ہے۔ حکومت کا یہ اقدام جبر کے مصداق اور آئین کی خلاف ورزی ہے، اس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے حکومت کی جانب سے سوشل میڈیا ضابطہ اخلاق کی آڑ میں لگائی جانے والی قدیم کے خلاف اپنے مذمتی بیان میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے خلاف کاروائیوں سے پہلے ہی سینکڑوں صحافی بے روزگارہوچکے ہیں، اب سوشل میڈیا صارفین خلاف کریک ڈاؤن تشویشناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ قانون سازی اچھی بات ہے مگر سائبر کرائم کو روکنے کے قوانین کا غلط استعمال نہیں ہوناچاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ آزادی صحافت کے نام پر ملک و قوم کے مفاد اور اخلاقی حدود کو پامال کرنا بھی زیادتی ہے ۔ دردانہ صدیقی نے حکومت سے ضابطہ اخلاق پر نظرثانی کا مطالبہ کیا ہے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس