Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

حکومت حج اخراجات کم کر کے عوام کے لیے حج کا سفر آسان بنائے۔ حافظ نعیم الرحمن


کراچی ؍10فروری2019ء:جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمن نے حکومت کی جانب سے رواں سال حج پالیسی میں سبسیڈی ختم کرنے اور حج اخراجات میں اضافہ پر شدید مذمت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مدینہ جیسی ریاست بنانے کے دعویداروں نے فریضہ حج کے خواہش مند افراد کے لیے مشکل بنادیا ہے ، عوام حج کے لیے پائی پائی جمع کرتے ہیں لیکن مہنگائی کی وجہ سے حج کی ادائیگی نا ممکن بن جاتی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ افسوس کی بات ہے کہ ایک جانب حکومتی خسارے کو جواز بنا کرحج پالیسی میں سبسیڈی ختم کر کے حج اخراجات میں اضافہ کردیا گیا لیکن دوسری جانب دیگر شعبوں کو سبسیڈی دی جارہی ہے ، اگر حج پر سبسیڈی دینا گوارا نہیں تو فرٹیلائز ر، ٹیکسٹائل انڈسٹری کے مالکان کو سرچارج کی مد میں 125ارب روپے معاف کیوں کیے گئے ؟ حج پر سبسیڈی دی بھی جاتی تو 9ارب روپے کی رقم بنتی ہے ، حکومت کو 9ارب روپے کی ریلیف دینا ممکن نہیں تو ان صنعتی اداروں کے ایک سو پچیس ارب روپے کیسے معاف کردیے گئے ؟۔انہوں نے کہاکہ پڑوسی ملک بھارت سمیت کئی ممالک میں حج کے سفر اور عازمین حج کی سہولیات کے لیے حکومت رقم مختص کرتی ہے لیکن پاکستان کی حکومت یہ کرنے پر تیار نہیں ۔انہوں نے کہاکہ حج ایک عبادت ہے اور آئین پاکستان کی رو سے حکومت پابندہے کہ لوگوں کو اس مقدس فریضے کی ادائیگی کے لیے سہولیات فراہم کرے، اگر حکومت نے یہ کام نہیں کرنا تو مذہبی امور کی وزارت کیوں قائم کی گئی ہے اور اس پر اخراجات کیوں اٹھائے جارہے ہیں؟۔انہوں نے کہاکہ ایک حج کے لیے لوگ ساری عمر اخراجات میں سے بچت کرتے رہتے ہیں ، بے شمار لوگوں نے اس بار بھی اپنی خواہشات پس پشت ڈال کر حج کے لیے وسائل جمع کیے ، اب اچانک انہیں بتایا جارہا ہے کہ نئی حج پالیسی میں سبسیڈی ختم کر کے حج اخراجات میں اضافہ کردیا گیا ہے۔اگر حکومت کو وسائل کی قلت کا مسئلہ درپیش ہے تووہ حج اخراجات میں رعایت ختم کرنے کے بجائے اپنے تعیشات پر آنے والے خرچ کم کرے۔انہوں نے کہاکہ حج اخراجات میں اضافہ کسی صورت قبول نہیں ، حکومت فی الفور نئی پالیسی مرتب کرے اور عوام کے لیے حج کا سفر آسان بنائے۔

Youtube Downloader id

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس