Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

قرارداد برائے مدارس دینیہ


 

مرکزی مجلس شوریٰ جماعت اسلامی پاکستان کا یہ اجلاس مدینہ کی اسلامی ریاست کادعویٰ کرنے والی حکومت کی طرف سے ملک میں دینی مدارس کے لیے مشکلات اور رکاوٹیں پیداکرنے کی مذموم پالیسی پر تشویش کااظہار کرتاہے۔

دینی مدارس کی روشن تاریخ اس بات پر شاہد ہے کہ یہ مدارس پاکستان کے نظریاتی اور جغرافیائی سرحدوں کے محافظ ہیں اور ملک میں اسلامی علوم کی اشاعت کے ساتھ معاشرے کی دینی ضروریات کو پورا کرنے کا مبارک فریضہ انجام دے رہے ہیں۔

دینی مدارس کی سرپرستی پاکستان کے اسلام پسند عوام کرتے ہیں اور ان مدارس کے حسابات کے واضح اور باقاعدہ آڈٹ ہوتے ہیں۔ لیکن تعجب کی بات ہے کہ ایک طرف مدارس کو حسابات بارے پوچھا جاتا ہے جبکہ دوسری طرف مدارس کے نام پر بینک اکائونٹس کھلوانے میں بے جا رکاوٹیں کھڑی کی جاتی ہیں۔

اجلاس مطالبہ کرتاہے کہ مدارس کے نام پر بینک اکائونٹس کے طریقہ کار کو آسان اور سہل بنایاجائے اور اکائونٹ کھلوانے کے تمام تقاضے پورے ہونے کے بعد غیر ضروری تاخیر سے گریز کیاجائے۔

مدارس کی رجسٹریشن اور تجدید پر عملاً پابندی لگائی گئی ہے ۔ اجلاس مطالبہ کرتاہے کہ رجسٹریشن کے سابقہ طریقہ کار کے مطابق مدارس کی رجسٹریشن اور تجدید کے لیے داخل شدہ ہزاروں درخواستوں کو نمٹایاجائے ۔

اجلاس نے حکومت کو خبرد ار کیاہے کہ وہ مدارس کی بندش کے خواب دیکھنا چھوڑ دے ۔ ریاست مدینہ میں مدارس بنائے جاتے ہیں ۔ گرائے نہیں جاتے ۔ پاکستان میں دینی مدارس کے پانچ امتحان بورڈ زکو دیگر بورڈز کی طرح باقاعدہ قانونی حیثیت دی جائے۔ پنجاب چیرٹی ایکٹ 2018ء مدارس کی حریت پر ایک کاری ضرب ہے۔ اس لیے اس امتیازی ایکٹ کو فی الفور واپس لیاجائے۔

دینی مدارس میں پڑھنے کے خواہش مند غیر ملکی طلباء کے لیے ویزوں کے حصول کا طریقہ کا ر آسان اور سہل بنایاجائے۔ دینی مدارس چونکہ تعلیمی ادارے ہیں اس لیے ان کو وزارت داخلہ کی بجائے وزارت تعلیم کے ساتھ منسلک کیاجائے۔

حال ہی میں خیبر پختونخوا کی حکومت نے سرکاری سکولوں میں اسلامیات اور عربی اساتذہ کی بھرتی کے دوران شہادۃ العالمیہ کے حامل دینی مدارس کے فضلاء کو شہادۃ العالمیہ کے 20نمبروں سے محروم کیاہے۔ اجلاس اس کو ظالمانہ اور امتیازی پالیسی قرار دے کر مستر دکرتاہے اور مطالبہ کرتاہے کہ اس فیصلے کو فی الفور واپس لیاجائے۔

اجلاس یہ بھی مطالبہ کرتاہے کہ 3اکتوبر 2018 ء کو وزیراعظم پاکستان جناب عمران خان کے ساتھ اتحاد تنظیمات مدارس کے ذمہ داران کے اجلاس میں زیر بحث لائے گئے متفقہ نکات پر عمل درآمد کیاجائے۔

 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس