Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشتگردی اور پاکستان کو جنگ کی دہمکی بھارتی مذموم عزائم کی عکاسی ہے۔ ہیومن رائٹس نیٹ ورک


کراچی 04 جنوری2019 ء:ہیومن رائٹس نیٹ ورک سندھ چیپٹر (HRN)کے صدرسردار اکبر اجن ایڈووکیٹ اور جنرل سیکریٹری کمال احمد فاروقی نے اپنے مشترکہ بیان میں مقبوضہ کشمیر میں دسمبر کے مہینے میں 40سے زائد معصو م شہریوں کی شہادت اور کئی سو افراد کے زخمی ہونے کے واقعات بھارتی فوج کی ظالمانہ کاروائیوں پر اظہار تشویش اور او آئی سی ،یو این او اور دنیا بھر کی انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپیل کی ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے شہریوں کو ان کے حقوق سے70 سالوں سے سے زائد کے عرصہ سے محروم رکھا ہے اس پر اپنی خاموشی کو توڑ کر لاتعلقی ختم کریں اور بھارتی فوج کو قتل عام کی کھلی چھٹی کو ختم کرائیں۔افسوس ناک بات یہ ہے کہ پہلے مظاہرین کو منتشر کرنے کےلئے ہوئے فائرنگ کی جاتی تھی لیکن اب سیدھی فائرنگ کی جاتی ہے اس صورتحال میں انسانی حقوق کی تنظیموں کو بولنے میں مشکل نہیں ہونی چاہیے۔ بھارتی حکومت اور فوج کے مظالم نے تمام حدود کو توڑ ڈالا ہے اور نہتے کشمیریوں کو شہید کیا جارہا ہے اور سیکڑوں کو پیلٹ گن سے زخمی کر کے بینائی سے محروم کیا ہے۔عالمی برادری اس ریاستی دہشت گردی پر آواز بلند کرے۔انہوں نے مزید کہا کہ بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی کی جانب سے ایک بار پھر پاکستان کو جنگ کی دہمکی اور بھارتی آرمی چیف کی جانب سے سرجیکل اسٹرائیک کی بات خطے کے امن کو تہ وبالا کرنے کی سازشوں کا حصہ ہے، پاکستان کے حکمران بھارتی دہمکیوں کے بدلے کرتارپور راہداری کھول کر امن کیلئے جو پیش رفت کی اسکے جواب میں بھارتی درندہ صفت فوج نے مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں بدترین دہشتگردی اور معصوم انسانوں کے خون سے ہولی کھیل کر یہ ثابت کردیا ہے کہ بھارتی حکمران آئندہ ہونے والے الیکشن میں اپنی جیت کیلئے پاکستان اور کشمیری عوام کیخلاف کچھ بھی کرنے کو تیار ہیں،بھارتی الیکشن میں اپوزیشن اور حکومتی اتحاد پاکستان مخالف پروپیگنڈا اور جنگ کی دھمکیاں دیکر بھارتی عوام کے جذبات کو بھڑکاکر اپنے اقتدار کو طول دینے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ پاکستان کو بھارتی جارحیت اور کشمیری عوام کیخلاف کھلی دہشتگردی کیخلاف اقوام متحدہ سمیت دنیا کے تمام عالمی فورمز پر بھرپور آواز اٹھانی چاہئے تاکہ بھارتی حکمرانوں کے چہرے سے جمہوریت کا نقاب اترسکے،کشمیریوں کی صرف سفارتی اور اخلاقی حمایت کی بجائے اب وقت آگیا ہے کہ بھارتی فوج کے ساتھ صف آرا مجاہدین کی جو ممکن ہوسکے مدد کی جائے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس