Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اسلامیات کی تدریس کے لیے غیرمسلم اساتذہ کی تقرری اسلامی تعلیمات اور روح کے منافی ہے


فیصل آباد26 دسمبر2018: اسلامی جمعیت طلبہ کے ناظم شہرحافظ زبیرعباسی نے کہاہے کہ تعلیمی اداروں میں اسلامیات کے مضمون غیر مسلم لیکچرارز کے ذریعے پڑھائے جانے کے فیصلے کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے اسے واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔انہوںنے محکمہ ہائر ایجوکیشن کی جانب سے کالجوں میں 5 فیصد غیر مسلم اساتذہ کو اسلامیات پڑھانے کے لیے تعینات کرنے کے فیصلے کو اسلامی تعلیمات کی روح کے منافی اور آئین پاکستان سے انحراف قرار دیتے ہوئے فیصلے کو واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ اس طرح اسلامی تعلیمات کا تقدس بھی مجروح ہوگا اور طلبہ وطالبات کے اذہان پر برے اثرات مرتب ہوں گے۔مزیدبراں انہوں نے کہاکہ معماران قوم کی تذلیل اور مجرموں کو پروٹوکول دینے والے معاشرے اپنی موت کا سامان خود کرتے ہیں پروفیسر میاں جاوید کی ہتھکڑیوں میں جکڑی لاش معاشرے کی بے حسی اور اداروں کی سنگدلی کا کھلا ثبوت ہے۔انہوں نے کہاکہ سرگودھا یونیورسٹی کے پروفیسر جاوید کی دورانِ حراست ہلاکت ہمارے لیے دکھ کی بات ہے، کوئی قوم استاد کی تذلیل کرکے فلاح نہیں پاسکتی۔ ایک جانب ایک پی ایچ ڈی ملزم کی بے بس ہلاکت اور دوسری جانب طاقت ور ملزم کا چیئرمین پی اے سی بننا کرپشن کیخلاف بڑے بڑے دعویٰ کرنے والوں کے چہرے سے نقاب اتارنے کے لیے کافی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ استاد کی تذلیل کرنے کے مرتکب افراد کو قرار واقعی سزا دی جائے اور دیگر بے گناہ اساتذہ کو فی الفور رہا کیا جائے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس