Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

مہنگائی،بیروزگاری،لاقانونیت اور معاشی بحران نے عوام کی زندگی اجیرن کردی ہے۔امیرالعظیم


لاہور23 دسمبر2018:امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کی 100روزہ کارکردگی محض زبانی جمع خرچ اورکاغذی کارروائی کے سوا کچھ نہیں ہے۔تحریک انصاف کی حکومت کے تمام دعوے اور نعرے ابھی تک عملی صورت اختیار نہیں کرسکے۔ صحت اور تعلیم کے شعبے میں تنزلی دیکھنے میں آرہی ہے ۔جنوبی پنجاب کے عوام کو الگ صوبے کا خواب دکھا کر پھر یو ٹرن لے لیا گیا بلکہ اس حوالے سے پاکستان تحریک انصاف کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ سے بیانات تک کو ہٹا دیا گیاہے۔ عوام الناس کو پینے کا صاف پانی تک میسر نہیں ہے۔ ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنانا ہے تو حکمرانوں کو دکھاوااور بیان بازی چھوڑ کر میدان عمل میں آنا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے گزشتہ روز لاہور میں عوامی وفودسے گفتگو اور سیالکوٹ میں مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انھوں نے کہا کہ حکمرانوں کی اب تک کی کارکردگی نے عوام کو شدید مایوس کیا ہے۔ تبدیلی کا خواب دکھا کر عوامی مسائل میں کئی گنا اضافہ کردیا گیا ہے۔ ملک و قوم کودرپیش مسائل کے حل کے لیے پی ٹی آئی کی حکومت کو سنجیدگی دکھانا ہوگی۔ ملک اس وقت معاشی لحاظ سے سنگین بحران کا شکار ہے۔انھوں نے کہاکہ پاکستان میں 40فیصد آبادی سطح غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہے۔عوام کامعیار زندگی بلند کرنا ہوگا۔ ملک میں ہر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والا شخص پریشان ہے۔ مہنگائی، بے روزگاری، لاقانونیت اورمعاشی بحران نے عوام کی زندگی اجیرن کردی ہے ۔ انھوں نے کہا کہ ہر سال اربوں روپے ہنڈی کے ذریعے بیرون ملک منتقل ہوتے ہیں۔حکومت کو ہنڈی کاکاروبار مکمل طورپر ختم کرناہوگا۔ انھوں نے کہاکہ پورے ملک میں صرف 14لاکھ 98ہزار افراد نے ٹیکس ریٹرن جمع کروائیں۔ ملکی ترقی و خوشحالی کے لیے ضروری ہے کہ بڑے مگر مچھوں کو ٹیکس نیٹ میں لایا جائے۔پاکستان میں ٹیکس چوری ایک فیشن بن چکی ہے۔ حکومت ٹیکس نیٹ کے دائرہ کارکو وسیع کرے اور عوام پر غیر ضروری بوجھ ختم کیا جائے۔ انھوں نے کہاکہ ملک میں قبل از وقت انتخابات کی بات حکومتی وزراء کی جانب سے آرہی ہے جو کہ حکومتی کارکردگی پر بڑا سوالیہ نشان ہے۔ یوں محسوس ہوتا ہے کہ جیسے حکمران طبقہ ملکی مسائل کودیکھ کر راہ فرار حاصل کرنا چاہتا ہے۔امیر العظیم نے مزید کہا کہ ملک وقوم اس وقت نازک صورت حال سے دوچار ہیں۔ دن بدن مالی بحران بڑھتا چلا جارہاہے۔ اگر ملک کودرپیش مسائل پر بروقت قابو نہ پایا توملکی حالات مزید خراب ہوں گے۔ 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں



سوشل میڈیا لنکس