Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

نئی حکومت بنتے ہی قادیانی کھل کر سامنے آ گئے ہیں۔ میاں زبیر لطیف،چوہدری نوید اسلم


فیصل آباد 8ستمبر2018 ء:جماعت اسلامی حلقہ پی پی114کے امیرمیاںزبیرلطیف،جنرل سیکرٹری چوہدری نویداسلم،نائب امیر رانانعیم اکرم،میاں عبدالستاربیگااور دیگر راہنماﺅں نے کہا ہے کہ پاکستانی آئین میں قادیانیوں پر لگائی گئی پابندیوں پر سختی سے عمل درآمد کی ضرورت ہے۔ قادیانیوں کا کردار دنیا میں اس وقت وہی ہے جو یہودیوں کا ہے۔ انہیں فی الفور تمام اہم عہدوں سے ہٹایا جائے۔ کسی قادیانی کو معاشی مشیر لگانے سمیت کسی اہم عہدے پر فائز کرنا درست نہیں ہے۔ مسلمان بین الاقوامی سطح پر تمام انبیاءکی شان میں گستاخی  کو قابل سزا جرم قرار دلوائیںاور عالمی سطح پر قانون سازی کروائی جائے۔ حکمران عصمت انبیاءکے تحفظ کیلئے پوری امت مسلمہ کو متحد کریں۔ ہماری سیاست، معیشت و معاشرت سمیت تمام قانونی ڈھانچے اسلامی ہونے چاہئیں۔ رہنماﺅں نے کہاکہ نئی حکومت بننے کے بعد قادیانی کھل کر سامنے آ گئے ہیں۔ وہ سمجھتے ہیں کہ شاید اس موقع پر انہیں کھڑے ہونے کا موقع مل جائے۔ پاکستانی آئین میں لکھا گیا ہے کہ قادیانی اپنی عبادت گاہ کو مسجد نہیں کہہ سکتے۔ اسی طرح نہ وہ اذان کہہ سکتے ہیں اور نہ اشتہاری مہم چلا سکتے ہیں۔ اس سلسلہ میں پاکستانی آئین میں سخت پابندیاں موجود ہیں صلیبی و یہودی نبی اکرم ﷺ کی طرح حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی شان میں بھی گستاخیاں کر رہے ہیں۔ یہ صرف مسلمان ہیں جو حضرت عیسیٰ اور حضرت موسیٰ علیھم السلام سمیت تمام انبیاءکا دل و جان سے عزت و احترام کرتے اور ان کی عصمت کا تحفظ اپنا ایمان سمجھتے ہیں۔ مسلمان ملکوں کو چاہیے کہ وہ او آئی سمیت تمام بین الاقوامی فورمز پر اس مسئلہ کو اٹھائیں۔ جب مسلمان حکومتیں جرات کا مظاہرہ نہیں کریں گی تو پھر مغرب کو موقع ملے گا اور ایسے واقعات کا رکنا ممکن نہیں ہے۔صلیبی و یہودی پہلے گستاخیاں کرتے ہیں اور جب مسلمان اس پر احتجاج کرتے ہیں تو پھر ان کیخلاف دہشت گردی کا پروپیگنڈا کیا جاتا ہے۔ یہ اسلام و مسلمانوں کیخلاف بہت بڑی سازش ہے۔ انہوںنے کہاکہ جوں جوں دن گزر رہے ہیں اس مسئلہ پر خاموشی بڑھ رہی ہے جو کہ کسی طور درست نہیں ہے۔ حکومت کو چاہیے کہ وہ انبیاءکی حرمت کے تحفظ کیلئے تمام مسلمان ملکوں کو متحد کرے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس