Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

سب جماعتوں کا مطالبہ ہے کہ الیکشن کمیشن کے ذمہ داران کو اب منصب پر رہنے کا کوئی حق نہیں ۔ لیاقت بلوچ


لاہور9اگست 2018ء:جماعت اسلامی پاکستان اور متحدہ مجلس عمل کے سیکرٹری جنرل اور اے پی سی ایکشن کمیٹی کے رکن لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ حالیہ انتخابات متنازعہ اور دھاندلی شدہ ہیں ۔ سب جماعتوں کا مطالبہ ہے کہ الیکشن کمیشن کے ذمہ داران کو اب منصب پر رہنے کا کوئی حق نہیں ۔ اپوزیشن کی جماعتیں آئندہ دو روز میں لاہور میں الیکشن کمیشن پنجاب کے دفتر کے باہر احتجاج کی تاریخ کا اعلان کریں گی ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے جماعت اسلامی لاہور کے دفتر میں پیپلز پارٹی لاہور کے صدر حاجی عزیز الرحمن چن ، جمعیت علمائے اسلام کے رہنماﺅں مولانا امجد خان ، ریاض درانی ، جماعت اسلامی کے رہنماﺅں بلال قدرت بٹ ، مولانا جاویدقصوری ، امیر العظیم ، ملک رمضان روہاڑی ، ضیاءالدین انصاری ایڈووکیٹ ، سرفراز احمد خان و دیگر کے ہمراہ پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ 

لیاقت بلوچ نے کہاکہ پورے ملک میں انتخابات پر شدید تحفظات کا ا ظہار کیا جارہاہے ۔ 26 جولائی سے انتخابات میں حصہ لینے والی جماعتوں کے مسلسل مشترکہ اجلاس ہورہے ہیں ۔ اے پی سی منعقد ہوئی ہیں جس میں سب کا متفقہ لائحہ عمل ہے کہ حالیہ انتخابات کے نتائج کو تسلیم نہیں کیا جاسکتا۔ انہوںنے کہاکہ الیکشن کمیشن کو بااختیار بنایا گیا تھا لیکن وہ بے بس نظر آیا ہے اور الیکشن کمیشن نے کسی اور کی دہلیز پر سرنڈر کر دیا ہے ۔ پورے الیکشن میں ریاست فریق بن گئی جس نے غیر جانبداری کی حیثیت کو متاثر کیا ہے ۔ اگر ریاستی ادارے فریق بن جائیں گے تو اس سے شدت پیدا ہوگی ۔ انہوں نے کہاکہ دھاندلی زدہ انتخابات پر پارلیمانی کمیشن اور سینیٹ کی ہول کمیٹی تشکیل دینی چاہیے ۔ ایک سوال کے جواب میں لیاقت بلوچ نے کہاکہ الیکشن کمیشن نے فارم 45 ویب سائٹ پر ڈال دیا ہے اب وہ جو چاہیں ویب سائٹ پر ڈال دیں ،ان نتائج کی حیثیت متنازعہ ہوچکی ہے ۔انہوں نے کہا آنے والی حکومت اور اس کے ماﺅتھ آرگن دھاندلی ہونے سے انکار اور اپوزیشن جماعتوں کے احتجاج و مطالبہ سے نظر اندازی اور تضحیک کا رویہ اپنائیں گے تو یہ خود حکومت کے لیے المناک ثابت ہوگا ۔ 2013 ءکے بعد کی حکومت نے بھی مطالبہ کو نظر انداز کیا اور اگر اب عمران خان بھی یہی طرز عمل اختیار کریں گے تو احتجاج اور مطالبہ زور پکڑ تا جائے گا ۔ دھاندلی سے پیدا ہونے والے درد کی دوا بھی ریاستی اداروں کو ہی کرنا ہوگی ۔

دریں اثنا لیاقت بلوچ نے نوجوانوں اور آزاد کشمیر سے آئے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ایٹمی قوت سے پاکستان ناقابل تسخیر ہوگیا لیکن باہمی نفاق و انتشار ، کرپشن ، بدعنوانی اور غیر ذمہ دارانہ رویے قومی وجودو سلامتی کے لیے اندر سے بڑاخطرہ ہیں ۔ یہ لعنتیں باہر کے دشمن سے زیادہ خطرناک ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ناجائز قابض فوج مظالم کی انتہا کر رہی ہے ۔ کشمیریوں کی قربانیاں لازوال ہیں ۔ پاکیزہ خون رنگ لائے گا ۔ اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق حق رائے شماری کشمیریوں کا انسانی بنیادی حق ہے ۔ نئی حکومت کو آزادی ¿ کشمیر کے لیے دوٹوک قومی پالیسی بنانا ہوگی ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس