Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

مینڈیٹ کوچرانے والے قومی مجرم ہیں ان کا محاسبہ ہونا چاہئے۔میاں مقصوداحمد


لاہور5  اگست 2018ء:متحدہ مجلس عمل پنجاب کے صدر اور امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمدنے کہاہے کہ 2018کے عام انتخابات میں16لاکھ78ہزارووٹوں کامستردہونا ناقابل فہم اور تشویش ناک امر ہے۔اتنے کم فرق پر دوبارہ گنتی امیدواروں کاحق ہے لیکن صرف چیدہ چیدہ حلقوں میں دوبارہ گنتی ہوسکی ہے۔169حلقوں میں مسترد ووٹ جیت کے فرق سے زیادہ ہیں جوکہ الیکشن کمیشن اور نگران حکومت کی واضح ناکامی ہے۔صرف پنجاب میں9لاکھ ووٹ مسترد ہوئے ہیں۔ملک کے اندراورباہر ہرکوئی انتخابی عمل اور نتائج پر تحفظات کااظہار کررہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزمنصورہ میں اہم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں کہاکہ میڈیارپورٹس کے مطابق قومی وصوبائی اسمبلیوں کے 248حلقوں میں جیت کامارجن پانچ فیصد سے کم ہے۔اس تناسب سے دیکھا جائے تو پوراانتخابی عمل متنازعہ نظر آتاہے۔ہارنے والوں کے ساتھ ساتھ جیتنے والے بھی حیران وپریشان ہیں۔اگر ملک میں غیر جانبدار،صاف شفاف الیکشن ہوتے تو آج صورتحال مختلف ہوتی مگر ایک مخصوص پارٹی کوجتوانے کے لیے پوری نظام کوہی تلپٹ کرکے رکھ دیا گیا ہے۔نئی بننے والی حکومت طاقتور اپوزیشن کے سامنے کمزور دکھائی دیتی ہے۔ایک دوسرے کے مینڈیٹ کوچرانے والے قومی مجرم ہیں ان کا محاسبہ ہونا چاہئے،الیکشن کمیشن اس کانوٹس لے۔انہوں نے کہاکہ ملک وقوم اس وقت انتہائی نازک صورتحال سے دوچار ہیں۔کسی قسم کی کوئی داخلہ وخارجہ پالیسی نظر نہیں آتی۔ملکی معیشت دگرگوں ہے۔نوجوانوں کی بڑی تعداد ملکی حالات سے دلبرداشتہ اور مایوس ہوکر بیرون ملک کارخ کررہی ہے۔پاکستان کی یوتھ کل آبادی کی60فیصد حصے پر مشتمل ہے۔اتنی بڑی تعداد میں افرادی قوت رکھنے کے باوجود پاکستان مسائل کی دلدل میں دھنستاہی چلاجارہاہے۔میاں مقصوداحمد نے مزید کہاکہ اب وقت آگیاہے کہ ملک میں نئی بننے والی حکومت اپنے منشور کے مطابق کام کا آغاز کرے۔عوام ان کی سودنوں کی کارکردگی کی منتظر ہے۔اگر تحریک انصاف نے بھی محض دعوؤں اور نعروں پر پانچ سال گزارنے کی کوشش کی تو اس کا حشر بھی آئندہ مسلم لیگ(ن)جیسا ہوگا۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس