Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

سابقہ حکمران پارٹیوں کے کرپٹ اور بدنام بھگو ڑے سیاسی یتیم خانوں میں پناہ لے رہے ہیں۔سراج الحق


لاہور11جون2018 ء:امیر جماعت اسلامی سینیٹرسراج الحق نے کہا ہے کہ سابقہ حکمران پارٹیوں کے بھگو ڑے جن کی وجہ سے سیاست بدنام اور کرپشن کا چلن عام ہو اوہ سیاسی یتیم خانوں میں پناہ لے رہے ہیں۔یہ لوگ نئی پارٹیوں کے جھنڈے اٹھا کر اپنے جرائم کو چھپا نہیں سکیں گے۔قوم 2018ءکے انتخابات میں ان لیٹروں کا محاسبہ کرے گی اور سیاسی و معاشی دہشتگردوں کو عبرت ناک شکست ہوگی۔ اگر مشرف کو الیکشن لڑنے کی اجازت ہے تو پھر جیلوں کے دروازے کھول دیں اور تمام مجرموں کو الیکشن لڑنے دیں۔چیف جسٹس دوبار آئین توڑنے والے کے ساتھ نرمی کا رسک نہیں لے سکتے،پانامہ کیس کے باقی مجرموں کو بھی کٹہرے میں لایاجائے۔ خیبرپختونخواہ میں آئندہ حکومت متحدہ مجلس عمل بنائے گی اور سابقہ حکومتوں کی طرف سے عوام کو دی گئی محرومیوں کا ازالہ کرے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاو ر میں صحافیوں کے اعزاز افطار ڈنر کے موقع پر خطاب اور بعد ازاں میڈیا کے نمائندوں کے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر امیر جماعت اسلامی خیبر پختونخواہ سینیٹر مشتاق احمد خان اور سیکرٹری جنرل عبدالواسع اور شبیر احمد خان بھی موجود تھے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ملک میں کرپشن کا بازار گرم کرنے اور عوام سے زندگی کی بنیادی سہولتیں چھیننے والوں کو یہ حق نہیں کہ وہ ایک بار پھر نئے چہروں اور پارٹیوں کے ساتھ قوم کو دھوکے اور فریب میں مبتلا کریں۔عوام ان لٹیروں کو پہچان چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملک میں غربت،جہالت ،مہنگائی ،بے روزگاری اور بدامنی کا اصل مجرم یہی ٹولہ ہے ۔ان لوگوں نے قوم کے ہاتھوں میں آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کی غلامی کی زنجیریں پہنائیں اور عالمی اسٹیبلشمنٹ کے اشارے پر پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کیا۔ انہوں نے کہا کہ جن لوگوں کا احتساب ہونا چاہیے تھا انہیں نوازا جارہاہے۔ان لوگوں کی جگہ اقتدار کے ایوان میں نہیں اڈیالہ جیل ہے اور اب انہیں اصل ٹھکانے پر پہنچانا ہوگا۔ انہیں جیلوں میں جانا کافی ہے یہ حکمرانی کے قابل نہیں۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ ملک میں نظام مصطفی ﷺ کا نفاذ آئینی تقاضا ہے۔متحدہ مجلس عمل کی منزل نظام مصطفی کا نظاذ ہے ہم ملک کو عدل و انصاف کا نظام دیں گے۔ہم کرپٹ قیادت اور عالمی اسٹیبلشمنٹ کے مہروں کو شکست دیں گے۔دینی جماعتوں کا اتحاد ملک کے لیے اللہ کا انعام ہے۔ انہوں نے کہا کہ مستقبل اسلامی نظام اور متحدہ مجلس عمل کا ہے۔خیبر پختونخواہ میں آنے والی حکومت متحدہ مجلس عمل کی ہوگی ۔قوم کو ہمیشہ سبز باغ دکھا کرلوٹنے والوں کا ہم محاسبہ کریں گے۔سودی نظام معیشت کا خاتمہ کرکے ملک میں زکوة عشر کا پاکیزہ معاشی نظام رائج کریں گے۔متحدہ مجلس عمل پاکستان کو ایک ویلفیئر اسلامی ریاست بنائے گی۔ جہاں عوام کو تعلیم علاج اور روزگارکی یکساں سہولتیں حاصل ہونگی۔ یکساں نظام اور نصاب تعلیم دیا جائے گا۔نوجوانوں کو روزگار کے حصول کے لیے بیرون ملک نہیں جانا پڑے گا۔ جب تک ریاست روزگار کا انتظام نہیں کرے گی نوجوانوں کو بے روزگاری الاﺅنس دیاجائے گا۔70سال سے زائد عمر کے بزرگو ں کو بڑھاپا الاﺅنس دیں گے او ر خواتین کو گھریلو دستکاریوں کے لیے آسان شرائط پر غیر سودی قرضے دیئے جائیں گے۔انہوں نے کہ متحدہ مجلس عمل نے اپنے منشور میں جن انقلابی اقدمات کا قوم سے وعدہ کیا ہے کہ ان کو پورا کیاجائے گا اور پاکستان کو عالمی برادری میں ایک باوقار مقام دلانے کے لیے متحدہ مجلس عمل قوم سے کیے گئے ایک ایک عہد کی تکمیل کرے گی

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس