Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

رمضان کا آخری عشرہ ’’خود احتسابی‘‘کے طورپرگزارجائے۔


فیصل آباد9جون218ء:اسلامی جمعیت طلبہ پی پی107کے زیراہتمام افطارڈنرسمن آبادمیں ہواجس میں ڈویژنل ناظم یاسرکھارا،ناظم شہرحافظ زبیر عباسی،جنرل سیکرٹری حافظ امان اللہ صابر،عثمان منیراورطلحہ نذیرسمیت طلبہ رہنمائوں نے شرکت کی ۔ا س موقع پرطلبہ کی کثیرتعداد بھی افطار ڈنرکی تقریب میںموجودتھی۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈویژنل ناظم یاسرکھارانے کہاکہ رمضان کا آخری عشرہ ’’خود احتسابی‘‘کے طورپرگزارجائے۔ہرمسلمان انسان کوگناہوں سے پاک زندگی گزارنے کی کوشش کرنی چاہیے، اگر گناہ ہو جائے تو فوراً توبہ کرے اور اللہ سے مغفرت طلب کرے۔انہوں نے کہاکہ قرآن مجید سے اعراض برتنے سے مسلمان رسوائی کا شکار ہیں جن قوموں نے قرآن عظیم کو سیکھا ، سمجھا اور اس پر عمل کیا، اللہ نے ان کو سربلند و سرفراز فرمایا اور جنھوں نے اس سے رُوگردانی کی وہ ذلت اور رسوائی سے دوچار ہوئے۔ افسوس کہ امتِ مسلمہ کے رہنماؤں کو اتنے واضح او رروشن دلائل میں بھی نجات کا راستہ سجھائی نہیں دیتا۔وہ بدو جن کو اونٹ چرانے کا ڈھنگ بھی نہ آتا تھا قرآنی ہدایات نے ان کو انسانیت کی گلہ بانی کا ہنر سکھا دیا۔ قرآن کی تلاوت کرنے والے کو اپنے رب سے ہمکلام ہونے کا شرف حاصل ہوتا ہے۔ جس امت کی طرف یہ قرآن بھیجا گیا وہ امتِ وسط اور خیرِ امت قرار پائی۔ قرآن کی ہدایات سے اعراض کر کے مسلمان کی حیثیت سے زندگی گزارنا یا ترقی کرنا اور دنیا اور آخرت میں سرخ رو ہونا ناممکن ہے۔ قرآن انقلاب کی کتاب تھی، ہم نے اسے ثواب کی کتاب بنا دیا۔ یہ اعمال اور سیرت و کردار کو بنانے اور سنوارنے کی کتاب تھی، ہم نے اسے وظیفوں کی کتاب بنا دیا ہے۔انہوں نے طلبہ پرزوردیاکہ وہ قرآن مجیدکی زیادہ سے زیادہ تلاوت کو اپنامعمول بنائیں اوراس کے مطابق اپنی زندگیاں گزاریں ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس