Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اسلام عورت کو تعلیم،معاش ،جائداد اورتمام شعبوں میں امتیازی حقوق دیتا ہے۔عالمی یوم خواتین


لاہور 7مارچ 2018ء:ّآج عالمی یوم خواتین کے موقع پر جماعت اسلامی پاکستان حلقہ خواتین نصف صدی سے زائد گزرنے کے باوجود حقوق نسواں کے لئے سر گرم ہے اور مختلف طبقائے فکر کی خواتین کے لئے آواز اُٹھاتی رہی ہے چاہے وہ عورت کی تعلیم اور اس کے بنیادی حقوق ہوں ،ہر میدان میں جماعت اسلامی حلقہ خواتین حتی الامکان موجود رہی ہے۔اسکی بین الاقوامی مثال جماعت اسلامی حلقہ خواتین کے وہ شعبہ جات ہےں جو بلا تفریق مذہب،انسانیت،ذات برادری،عمر ، ناخواندگی ہر ضرورت مند کی حمایت کے لئے کمر بستہ ہے۔اسی سلسلے میں ہمارے کئی شعبہ جات کام کر رہے ہیں ہمارے کمیونٹی سینٹرز تعلیم کی فراوانی کے لئے سستی اور معیاری تعلیم اور طالبات کی کریکٹر بلڈنگ کے لئے کوشاں ہیں۔ بچے رعائتی فیس پرتعلیم حاصل کر رہے ہیں محدود وسائل کے ساتھ اپنی ذاتی فنڈنگ سٹریٹ چائلڈ کے لئے 138سکولز پرائمری و بنیادی پر 20,000سے زائد طلبہ تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ان کو کورس کی کتابیں،بیگز اور سردی و گرمی کے کپڑے مفت دئیے جاتے ہیں۔ہمارے جامعتہ المحصنات اور قرآن انسٹیٹیوٹ کے 85ادارے پورے پاکستان میں دینی اور عصری تعلیم کو سامنے مدنظر رکھتے ہوئے کامیابی سے چل رہے ہیں۔جن میں طالبات کی تربیت اس طرح کی جاتی ہے کہ وہ معاشرے میں فعال کردار ادا کر سکےں۔اور اسی طرح ہمارے خدمت خلق کے ادارے/ رفاہی سرگرمیوں کے میدان میں طویل باب ہیں اور کئی عشروں پر محیط کارکردگی ہے۔

صرف لاہور میں2,92,580,17 راشن کی تقسیم ،تعلیمی وظائف،شادی گفٹ بکس تقسیم کرتے ہیں۔نادار اور مستحق بچیوں کی اجتماعی نکاح کی تقریب منعقد کی جاتی ہے۔جس کے ساتھ ساتھ بنیادی ضروریات کا سامان بھی فراہم کیا جاتا ہے۔عید الاضحٰی کے موقع پر کچی بستیوں میں گوشت کی تقسیم اور اقلیتی برادری میں بلا تفریق کسی مذہب،نسل یا برادری کے اہم خواتین کے مسائل کے لئے اپنی ان رفاہی سر گرمیوں کو جاری رکھتے ہیں۔ان کو گرمی سردی کے کپڑوں کی فراہمی ،تعلیمی وظائف،بستر اور رضائیاں بھی ہزاروں کی تعداد میں فراہم کی جاتی ہیں۔جماعت اسلامی خواتین وکلاءاور ججز خواتین کی ورکشاپ بھی کرواتی ہے۔

اس سال قومی اسمبلی میں ملازمت پیشہ خواتین کے اوقات کارمیں تبدیلی کے حوالے سے بل جمع کرایا گیا KPKمیں گھریلو تشدد کے خلاف بل جمع کرایا گیا۔خواتین کے بہت سے مقدمات ہمارے پاس جمع کرائے گئے جن میں سے تقریبا تمام حل ہو چکے ہیں جیلوں میں خواتین پر کام کیا جاتا ہے۔انکا ماہرین نفسیات سے معائنہ کرانا اور ان کی کونسلنگ بھی کی جاتی ہیں۔ KPK میں راشدہ رفعت کی سربراہی میں جہیز اورشادی تقریبات میںبے تحاشا اخراجات پر پابندی کا بل منظور کرایا گیا ۔

ملازمت پیشہ خواتین کی ذہنی اور فکری تربیت کے لئے مختلف فورمز کا انعقاد کیا جاتا ہے ۔تعلیمی پالیسی کے لئے حکومتی سظح پر سفارشات جمع کرائی گئی ہیں۔یتامہ پراجیکٹ،راشن کی تقسیم اور رمضان پیکجز کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے۔ڈاکٹر سمعیہ راحیل قاضی رکن اسلامی نظریاتی کونسل،ڈپٹی سیکریٹری جنرل حلقہ خواتین ثمینہ سعید اورناظمہ ضلع لاہورزرافشاں فرحین نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ ہم ابھی حکومتی سطح پر نہیں بلکہ اپنی کوششوں سے جماعت اسلامی پاکستان حلقہ خواتین کے یہ پراجیکٹ کام کر رہے ہیںہم اپنے کچھ مطالبات حکومتِ وقت سے رکھتے ہیں کہ 

٭خواتین کو اسلام کے تفویض کردہ تمام حقوق بالخصوص تعلیم اور صحت جیسی بنیادی سہولیات کی فراہمی کویقینی بنایا جائے۔

٭عورت تہذیبی اقدار کی جڑ ہے لہذا ذرائع ابلاغ پر ایسے پروگرام نشر کئے جائیں جن سے اسلامی تعلیم و تربیت اور اسلامی ثقافت کو فروغ ملے ۔

٭ملازمت پیشہ خواتین کے تمام آئینی اور قانونی حقوق کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے۔ 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس