Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

تعلیمی اداروں میں جنسی تعلیم معاشرے کو بے راہ روی کی طرف دھکیلنے کی کوشش ہے۔ ڈاکٹر معراج الہدیٰ


کراچی 06مارچ 2018 ء:جماعت اسلامی سندھ کے امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے سرکاری تعلیمی اداروں میں جنسی تعلیم کے فروغ کیلئے اساتذہ کی تربیتی عمل پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ قصور واقعہ کی آڑ میں معصوم بچوں کے ذہنوں کو پراگندہ کرنے کیلئے جنسی تعلیم دینا معاشرے میں بے راہ روی کو بڑھاوا دینے کے مترادف ہے، جس کی بھرپور مزاحمت کی جائے گی۔انہوں نے آج ایک بیان میں مزید کہا کہ سندھ حکومت سرکاری تعلیمی اداروں میں جنسی تعلیم سے آگاہ کرکے معاشرے میں مزید انتشار،بے راہ روی کی بجائے تعلیم کی بہتری کیلئے بند اسکولز کو کھولنے اور گھوسٹ اساتذہ کی حاضری کو یقینی بنانے کیلئے کوششیں کرے۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومتی ناہلی اور کرپشن کی وجہ سے اس وقت دیگر شعبہ جات کی طرح تعلیم کا شعبہ بھی تباہی کے کنارے پر کھڑا ہے، کاپی کلچر کا راج، ہزاروں اسکولز بند،اسکولز بلڈنگ وڈیروں کی اوطاق اور مال مویشیوں کے باڑوں کی شکل میں موجود جبکہ لاکھوں اسکولز چاردیواری، باتھ روم اور صاف پانی سمیت دیگر بنیادی ضروری اشیاءسے محروم ہیں، اسلئے سندھ حکومت اگر واقعی تعلیم کی بہتری کیلئے سنجیدہ ہے تو سب سے پہلے میرٹ پر قابل اساتذہ سمیت دیگر غیر تدریسی اسٹاف کی بھرتی کو یقینی بنانے، گھوسٹ اساتذہ کے خاتمے کو یقینی، اسلام اور اسلامی نظریہ پاکستان سے ہم آہنگ تعلیمی نصاب مرتب کیا جائے۔ 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس