Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

سرمایہ دار کی فیکٹریوں میں مسلسل اضافہ ہورہاہے مگر مزدور کے گھر میں چولہا نہیں جل رہاہے ۔ لیاقت بلوچ


لاہور3مارچ2018 ء:سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ مقتدر طبقہ نہیں چاہتاکہ کوئی اسے چیلنج کرے اور دولت کے ذرائع پوچھے ۔ملکی وسائل کی لوٹ مار کرنے والے عدالتوں کے پوچھنے پر بلبلا اٹھے ہیں اور عدلیہ کو دھمکیاں دینے پر اتر آئے ہیں ۔سرمایہ دار کی فیکٹریوں میں مسلسل اضافہ ہورہاہے مگر مزدور کے گھر میں چولہا نہیں جل رہاہے ۔ ملز مالکان کی نظر میں مزدور کی کوئی اہمیت نہیں ۔ جماعت اسلامی مزدوروں کو کارخانے کی پیدوار میں شامل کرنا چاہتی ہے تاکہ مزدور کو بھی اس کی محنت کا پھل مل سکے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں نیشنل لیبر فیڈریشن کی مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر صدر نیشنل لیبر فیڈریشن رانا محمود علی خان اور سیکرٹری جنرل حافظ سلمان بٹ بھی موجود تھے ۔

لیاقت بلوچ نے کہاکہ سوشلزم اور سرمایہ دارانہ نظام فلاح کے نام پر انسانوں کی تضحیک کا نظام ہے اس کے مزدور کی خوشحالی کے تمام تر دعوے کھوکھلے ہیں یہ انسان کا خون نچوڑنے اور استحصال کا نظام ہے ۔ اشتراکیت کے خاتمہ کے بعد مغربی سرمایہ دارانہ نظام خود کو ہاتھی سمجھنے لگا ہے اور اس کا پرچار کرنے والے عام آدمی کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ وقت نے ثابت کر دیاہے کہ انسانوں کے بنائے ہوئے معاشی نظام انسانیت کو مسائل کی دلدل میں دھکیل رہے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ صرف اسلام کا عادلانہ نظام معیشت ہی انسانیت کے موجودہ دکھوں اور پریشانیوں کا مداوا کر کے دنیا کو خوش حالی کی منزل سے ہمکنار کر سکتاہے ۔ اسلام نے ان نظاموں کی قلعی کھول دی ہے اس لیے ہم حکومت سے بار بار مطالبہ کرتے رہے ہیں کہ اگر ملک کو خوشحالی کے راستے پر ڈالنے اور معاشی ترقی کو یقینی بنانے کے لیے ضروری ہے کہ سودی نظام معیشت سے توبہ کی جائے اور آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک سے قرضوں کی بھیک لینے کی عادت کو ترک کر کے خود انحصاری کا باوقار رستہ اختیار کیا جائے ۔ انہوںنے کہاکہ مزدور کو خوشحال کیے بغیر ملک خوشحال نہیں ہوسکتا۔ غریب کا بیٹا پڑھے گا تو ملک آگے بڑھے گا ۔ انہوںنے کہاکہ مزدوروں کے مسائل کے حل کی طرف کسی حکومت نے توجہ نہیں دی ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں

سوشل میڈیا لنکس