Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

دستور پاکستان کے مطابق ملک میں قرآن و سنت کے منافی کوئی قانون نہیں بن سکتا۔لیاقت بلوچ


لاہور11فروری2018ء:سیکرٹر ی جنرل جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ اسلامی جمہوری پاکستان کا 1973 ءکا دستور ملک کی تمام اکائیوں کے درمیان ایسا عمرانی معاہدہ ہے جس پر تمام مکاتب فکر کے علماء، مشائخ ، سیاسی اور سماجی طبقات کا اعتماد ہے ۔ دستور پاکستان کے مطابق ملک میں قرآن و سنت کے منافی کوئی قانون نہیں بن سکتا۔73 ءکے دستور میں اکثریت اور اقلیتوں کے حقوق محفوظ ہیں ۔ کسی فرد یا گروہ کو زبردستی اپنانقطہ نظر مسلط کرنے کا اختیار نہیں اور نہ ہی ریاست اور ریاستی اداروں کے خلاف مسلح جدوجہد کا کسی کو حق حاصل ہے ۔ اسلامی جمہوری پاکستان میں نفاذ شریعت کے نام پر طاقت کا استعمال جائز نہیں ۔ ریاست کے خلاف مسلح محاذ آرائی ، لسانی ، علاقائی ، قوم پرستی اور لاقانونیت کے نام پر تخریب و فساد اور دہشتگردی کی تمام صورتیں احکام شریعت کے خلاف ہیں۔ عدلیہ کی آزادی کے لیے جماعت اسلامی نے حقیقی جنگ لڑی جس میں جماعت اسلامی کے کارکنوں نے اپنی قربانیاں دیں ۔ہم عدلیہ کی آزادی و بحالی کے لیے اس لیے میدان میں نکلے تھے کہ عدالتیں ملک میں آئین و قانون کی پاسداری قائم کروائیں اور جو حکمران آئین و قانون سے انحراف کریں تو عدالت کے سوا کسی کو حق نہیں کہ وہ کسی کا بھی محاسبہ کرے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے جماعت اسلامی شرقی لاہور کے زیراہتمام عامر ٹاﺅن میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد ، مرزا رشید ، زبیر صدیقی ودیگر بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ 

لیاقت بلوچ نے کہاکہ ہم ریاستی اداروں سے کہتے ہیں کہ قانون کی گرفت کا محاسبہ محض ایک خاندان تک محدود نہیں ہوناچاہیے جس کسی نے بھی ملکی وسائل کو لوٹا ہے ، غیر قانونی اندرون و بیرون ملک جائیدادیں بنائی ہیں ان سب کو احتساب کے شکنجے میں جکڑنا چاہیے ۔انہوں نے کہاکہ ریاستی اداروں کی ذمہ داری ہے کہ کوئی ممبر قومی و صوبائی اسمبلی سینیٹ کے انتخابات کی رائے کی قیمت وصو ل کر کے سیاسی جمہوری عمل کے ناسور کا کردار ادا کرے۔ انہوںنے کہاکہ موجودہ حکومت میں عقیدہ ختم نبوت اور تحفظ ناموس رسالت اور قرآن و سنت کے نفاذ کے لیے اکٹھے ہونا ناگزیر ہے ۔ ان شاءاللہ اسلامیان پاکستان ، پاکستان کو مادر پدر آزاد ریاست بنانے کی خواہش رکھنے والوں کے ناپاک ارادوں کو خاک میں ملا دیں گے ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس