Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

الیکشن کمیشن سینیٹ انتخابات میں ارکان اسمبلی کی خرید و فرو خت کا سختی سے نوٹس لے : سراج الحق


لاہور 10فروری 2018ء:امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے الیکشن کمیشن آف پاکستان سے مطالبہ کیاہے کہ سینیٹ کے انتخابات میں ارکان اسمبلی کی خرید و فرو خت کا سختی کے ساتھ نوٹس لیا جائے ۔ امیدواران ووٹ خریدنے کے لیے پر تول رہے ہیں اور ارکان اسمبلی کی باقاعدہ مویشی منڈیوں میں جانوروں کی طرح بولیاں لگائی جارہی ہیں ۔ 

اپنے ایک بیان میں سینیٹر سراج الحق نے اس صورتحال کو ملکی سلامتی اور قومی یکجہتی کے لیے انتہائی خطرناک قرار دیتے ہوئے کہاکہ اگر ایوان بالا میں لوگ دولت کے بل بوتے پر پہنچنے لگے تو ملک دشمن عناصر کو اس صورتحال سے فائدہ اٹھانے سے کوئی نہیں روک سکے گا اور آئینی اداروں کا تقدس باقی نہیں رہے گا ۔ انہوں نے کہاکہ تمام محب وطن قوتوں اور قومی اداروں کو بھی اس صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے اس ناسور کو مزید پھیلنے سے روکنا چاہیے اور ارکان اسمبلی پر کڑی نظر رکھی جائے ۔انہوں نے کہاکہ جن ارکان اسمبلی کے بارے میں معلوم ہو اور ثبوت مل جائیں کہ انہوں نے اپنے ضمیر کا سودا کیاہے اسے ہمیشہ کے لیے بلیک لسٹ کر کے نااہل قرار دے دیا جائے تاکہ آئندہ بکاﺅ مال پاکستان کے آئینی اداروں تک نہ پہنچ سکے ۔ انہوں نے کہاکہ ملکی سا لمیت کے خلاف کام کرنے والوں کو روکنا ہم سب کا فرض ہے اور اس فرض سے کوتاہی ملک و قوم کے مستقبل سے کھیلنے کے مترادف ہے ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ جماعت اسلامی قبائلی عوام کے حقوق کے تحفظ کے لیے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گی ۔ قبائل نے پاکستان کے تحفظ کے لیے ناقابل فراموش قربانیاں دی ہیں ، انہیں قومی وسائل میں سے ملک کے دیگر علاقوں میں رہنے والے شہریوں کی طرح حصہ ملناچاہیے ۔ تعلیم ، صحت اور روزگار کی سہولتوں پر ان کا بھی حق ہے ۔انہوںنے کہاکہ حکمرانوں کے پاس عوامی مسائل کے حل کا کوئی منصوبہ نہیں بلکہ حکمران خود عوام پر بوجھ بنے ہوئے ہیں اور قومی وسائل عوام پر خرچ کرنے کی بجائے اپنے عیش و عشرت پر اڑا رہے ہیں جبکہ عوام کو پینے کا صاف پانی تک میسر نہیں ۔ انہوںنے کہاکہ 2018 ءکے انتخابات کرپٹ اور بددیانت حکمرانوں سے نجات کاذریعہ ہیں ۔ عوام ان لٹیروں کے چنگل میں پھنسنے کی بجائے دیانتدار اور باکردار قیادت کا انتخاب کریں ۔ دیانتدار قیادت ہی ملک کو موجودہ مسائل کی دلدل سے نکال سکتی ہے ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس