Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

پنجاب یونیورسٹی میں آنسوگیس کی شیلنگ،گرفتاریاں اورآپریشن اافسوس ناک اور قابل مذمت ہے۔میاں مقصوداحمد


لاہور24جنوری 2018ء: امیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصوداحمدنے پنجاب یونیورسٹی میں کشیدگی اور اسلامی جمعیت طلبہ کے کارکنوں کی بڑے پیمانے پر گرفتاریوں پر اپنی شدید تشویش کا اظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت تاریخی درس گاہ کاماحول خراب کیاجارہا ہے۔ایک لسانی تنظیم کی جانب سے جمعیت کے پائنیز فیسٹیول کوخراب کرنے اور توڑ پھوڑ کرنے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔پولیس کی جانب سے اسلامی جمعیت طلبہ کے خلاف روایتی ہٹ دھرمی کامظاہرہ کیاجارہاہے۔انہوں نے کہاکہ پختون طلبہ گروپ کی طرف سے آئے روزمنفی ہتھکنڈے استعمال کرنا تشویش ناک ہے۔پنجاب یونیورسٹی میں پولیس کی جانب سے آنسوگیس کی شیلنگ،گرفتاریوں کے لیے ہاسٹلزمیں سرچ آپریشن اور داخلی وخارجی راستوں کو بلاک کرناافسوس ناک اور قابل مذمت امرہے۔انہوں نے کہاکہ اسلامی جمعیت طلبہ کی مثبت سرگرمیوں کوٹارگٹ کرکے جامعہ پنجاب کاپُرامن تعلیمی ماحول تباہ کرنا غیر ذمہ دارانہ طرزعمل اور لمحہ فکریہ ہے جس سے پورے ملک میں منفی پیغام جاتا ہے۔پنجاب یونیورسٹی کی انتظامیہ کی جانب سے ان قوم پرست شرپسندعناصر کے خلاف جلدازجلدکارروائی عمل میں لائی جانی چاہئے۔انہوں نے کہاکہ اسلامی جمعیت طلبہ کے تمام گرفتار کارکنان اور ذمہ داران کو فوری طور پر رہاکیاجائے۔پولیس نے جس انداز میں معاملے کوہینڈل کیااس سے طلبہ اور ان کے والدین میں اضطراب بڑھ گیا ہے۔یونیورسٹی میں لسانیت کو پھیلانے اور امن وامان کی صورتحال کوخراب کرنے کی کسی کو بھی اجازت نہیں دی جاسکتی۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس