Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اگر ملک میں شرعی سزائیں نافذ ہوتیں تو آج قوم کو معصوم اور کمسن بچیوں کے لاشے نہ اٹھانے پڑتے ۔راشدنسیم


لاہور12جنوری2018ء: نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان راشد نسیم نے کہاہے کہ اگر ملک میں شرعی سزائیں نافذ ہوتیں تو آج قوم کو معصوم اور کمسن بچیوں کے لاشے نہ اٹھانے پڑتے ۔ اسلامی سزاﺅں پر پھبتیاں کسنے اور انہیں ظالمانہ قرار دینے والوں نے قوم کو موجودہ صورتحال سے دوچار کیا ہے ۔ مغربی اور سیکولر نظام کے پیروکار ملک میں فحاشی عریانی اور بے حیائی پھیلانے کے ذمہ دار ہیں جس کی وجہ سے آج یہ دن دیکھنا پڑے ہیں ۔ عورت کے حقوق کے تحفظ کے نام پر بیرونی ایجنڈے کی تکمیل کرنے والوں نے پاکستان کو دنیا بھر میں بدنام کردیا ہے ۔ اگر رحمة اللعالمین کا نظام ہوتا تو ملک میں شرم و حیا ، عدل و انصاف ، اخوت و محب اور امن کا بول بالا ہوتا ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے کراچی میں جمعیت طلبہ عربیہ کے تحفظ مدارس کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ 

راشد نسیم نے کہاکہ کراچی میں پچھلے تیس سال سے ہزاروں لوگوں کا قتل عام کیا گیا ۔ اغوا برائے تاوان اور بھتہ خوری کا راج رہا کراچی کے شہریوں نے خوف اور اذیت کے سائے میں زندگی گزاری ہے ۔ عوام کو تعلیم ، علاج اور صاف پانی جیسی بنیادی ضروریات سے محروم رکھنے کے جرم میں مدارس کا تو کوئی ہاتھ نہیں ، مدارس نے ہمیشہ محبت اور بھائی چارے کی فضا قائم کرنے کی کوشش کی ہے ۔ مدارس کو مورد الزام ٹھہرانے والے در اصل ملک میں دینی قوتوں کا راستہ روکنا اور معاشرے کی اصلاح کے لیے مسجد و مدارس کے کردار کو ختم کرنا چاہتے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ مغرب کے آلہ کاروں کو اپنے مذموم مقاصد میں ناکامی کا منہ دیکھنا پڑے گا ۔دریں اثنا راشد نسیم 12 جنوری کو منصورہ لاہور میں جاری کارکنان کی مرکزی تربیت گاہ سے خطاب کریں گے ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس