Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

صوبائی حکومت اورشوگر مل مالکان کیخلاف پورے پنجاب کے کسان متحد ہوچکے ہیں۔میاں مقصوداحمد


لاہور6جنوری 2018ء: امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمدنے کہاہے کہ کسانوں سے عدالتی احکامات کے باوجود بھی شوگرملیں180روپے فی من گنا نہیں خرید رہیں۔کسانوں کومجبورکیاجارہا ہے کہ وہ 100روپے سے120روپے فی من تک گنے کو فروخت کریں۔گنے کے کسانوں کو ریلیف دینے کے لئے اور شوگر مل مالکان کی ظامانہ پالیسیوں کے خلاف پورے پنجاب کے کسان متحد ہوچکے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز منصورہ لاہور میں شوگر مل مالکان کے خلاف جاری احتجاجی تحریک کے حوالے سے امراء اضلاع کے اہم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔میاں مقصود احمد نے اس حوالے سے مزید کہا کہ ہم نے پنجاب حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ  وہ گنے کے180روپے فی من سرکاری ریٹ کے مطابق خریداری کے لیے شوگر مل مالکان کو پابندبنائے اور کسانوں کی سابقہ اربوں روپے کے بقایاجات کو بھی یقینی بنایا جائے۔انہوں نے کہاکہ و زیر اعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف نے احکامات دیئے تھے کہ پنجاب کی تمام شوگر ملیں کسانوں سے 180روپے فی گنا خریدیں گی اور کسانوں کے بقایاجات بھی اداہوں گے لیکن ابھی تک انکی اپنی شوگر مل سمیت کہیں بھی عمل درآمد نہیں ہورہا۔ صوبہ بھر کے کسان حکومت پنجاب سے مایوس ہوچکے ہیں اور ہمیں امید ہے کہ عدلیہ ہمیں جلدانصاف فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ گنے کے کسانوں کو ریلیف فراہم نہ کرنے،شوگر مل مالکان اور حکومت پنجاب کی بے حسی کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔اجلاس سے میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ کسانوں کے مطالبات کے حل ہونے تک جماعت اسلامی کی احتجاجی تحریک جاری رہے گی۔                

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس