Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

پاکستان کی بنیاد دو قومی نظریہ ہے جو کہ اصل میں انسانیت کی بنیاد ہے


پشاور 12دسمبر2017ء: منتظم جمعیت طلبہ عربیہ صوبہ خیبر پختون خواہ حافظ شمشیرعلی شاہد نے کہا ہے کہ مدارس دینیہ جو کہ اسلام کے قلعے ہیں اس پرکبھی آنچ نہیں آنے دیں گے کیونکہ مدارس ا کے طلبہ ہی اس ملک کے حقیقی وفادار اور محافظ ہے ملک پاکستان کی بنیاد دو قومی نظریے کی بنیاد پر معرض وجود میں آیا ہے جو کہ اصل میں انسانیت کی بنیاد ہے

مسلمان ہونے کا مطلب یہی ہے کہ ہمارا نظریہ ہماری سوچ ہماری تہذیب و تمدن سیاست و معیشت اسلام کے مطابق ہو. اس موقع پر صوبائی ناظم نشرواشاعت عابد محمود دیروی نے کہا کہ؛ قیامِ پاکستان کے اغراض و مقاصد یہ ہے کہ دو قومی نظریہ کی حقانیت ہوگی، قومی تشخص کا تحفظ، اسلامی ریاست کے قیام کی خواہش، اسلامی معاشرے کی تشکیل، اسلامی تہذیب و ثقافت کا تحفظ، ملک اسلامیہ کے مفادات کا تحفظ اور عالم اسلام کے اتحاد سمیت دیگر مقاصد شامل ہو.اسی مقصد کے حصول کے لئے مدارس دینیہ کے 8 لاکھ طلبہ ہر اول دستہ بننے کے لئے تیار ہے.یہ محض ایک خطہ زمین حاصل کرنا نہ تھا بلکہ ایسا ملک حاصل کرنا تھا جہاں پر مسلمان اپنی اپنی اقدار کی روشنی میں قرآن و سنت کی بالادستی کو پیش رکھتے ہوئے اپنی انفرادی و اجتماعی زندگی گزاریں.

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس