Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

پیراڈائز لیکس سمیت پاکستان کے اداروں کو لوٹنے والوں کا بھی محاسبہ ہونا چاہئے۔میاں مقصوداحمد


 

لاہور12 نومبر2017ء:جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ نواز شریف کے خاندان پر احتساب ختم نہیں ہونا چاہئے بلکہ پیراڈائز لیکس سمیت پاکستان کے اداروں کو لوٹنے والوں کا بھی محاسبہ ہونا چاہئے۔موجودہ حکومت رفتہ رفتہ اپنے انجام کی جانب گامزن ہے۔ عمران خان کے اردگرد بھی چلے ہوئے کارتوس موجود ہیں جنہوں نے ہمیشہ عوام سے دھوکہ کیا۔سول ملٹری تعلقات کی کشیدگی کے مفروضوں سے ملک کو دنیا بھر میں نقصان ہورہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بہاول پور میں منعقدہ ورکرز کنونشن سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ میاں صاحب پوچھتے پھرتے ہیں کہ مجھے کیوں نکالاتو میاں صاحب سن لیں کہ عوام نے آپ کو تین بار ملک کا وزیر اعظم چنا لیکن آپ نے ملک سے خیانت کی ہے ،نئی نسل کا مستقبل تاریک کیا۔ پوری قوم جانتی ہے کہ نواز شریف کے لیے قوانین تک کو تبدیل کردیا گیا۔ختم نبوت کے آئین میں تبدیلی کرنا ایک سوچی سمجھی سازش تھی۔ قوانین کے ذریعے حلف کو تبدیل کرکے مسلمانوں کے ایمان کو تبدیل کرنے کوشش کی گئی تاکہ قادیانیوں کو الیکشن میں شامل کرکے حکومت میں لایا جاسکے۔ اس پرکمیٹیاں بنی لیکن کوئی رپورٹ آج تک منظر عام پر نہیں آئی صرف رانا ثنااللہ اپنے بیانات کی تردیدیں کرتے پھرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ شہر کراچی اپوزیشن کا شہر تھا، جماعت اسلامی کا شہر تھا لیکن سب کچھ چھین کر مہاجر ازم کے نام پر الطاف حسین کے حوالے کردیا گیا۔شہر قائد کی سیاست کو دنیا بھر میں بدنام کردیا گیا۔نااہل شخص کو پارٹی کا صدر بنا دیا گیا۔سیکولر قوتیں ہمارے مذہب،تہذیب،ثقافت اور نئی نسل کے ذہنوں پر حملہ آور ہیں۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی لوگوں کو ریلیف دینے پر یقین رکھتی ہے۔ صوبہ بہاولپور کی بحالی اس خطے کے لوگوں کا حق ہے۔ فاٹا کو کے پی کے میں شامل ہونا چاہئے۔ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمد نے کہا کہ کارکنان منظم ہو کر غلبہ دین کے لیے میدان عمل میں نکلیں ۔ملک کا سارا نظام سود پر چل رہا ہے جو اللہ کے حکم کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔ اللہ کے حکم کی خلاف ورزی ہورہی ہے جس کی وجہ سے پاکستان کی معیشت تباہ ہورہی ہے۔ ملک میں سودی نظام کے بعد سب سے بڑا مسئلہ ملکی قیادت ہے اور ملک کو ایک دیانت دار قیادت کی ضرورت ہے جو کہ صرف جماعت اسلامی فراہم کر سکتی ہے۔ جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر پنجاب اسمبلی ڈاکٹر سید وسیم اختر نے کہا کہ نا اہل حکمرانوں نے جنوبی پنجاب کے ترقیاتی منصوبوں کے تیس ارب روپے میٹرو پر لگا دیے۔اس خطے کے حق کو میٹرو پر لگانے پر اعلان بغاوت بھی کیا۔جماعت اسلامی کو موقع ملا تو بہاولپور صوبہ ضرور بحال ہوگا۔انہوں نے کہا کہ چولستان کی سینکڑوں ایکڑ رقبے پر حکومتی وزراء قابض ہورہے ہیں۔حکومت کو وارننگ دی جاتی ہے کہ قابضین کو چولستان سے بے دخل کرنے کے لیے ہر حد تک جائیں گے۔ سندطاس معاہدے کے بعد چولستان سمیت اس خطے کے پانی کو دینے کا وعدہ کیا گیا تھا جسے پورا کیا جائے اور چولستان کوعلیحدہ ضلع بنایا جائے۔انہوں نے کہاکہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ گنے کے کاشتکاروں کو ان کے معاوضوں کی ادائیگیاں کی جائیں۔آج کا یہ اجتماع حکومت سے صوبہ کی بحالی کا مطالبہ کرتا ہے۔ کنونشن سے امیرضلع بہاول پور سید ذیشان اختر نے بھی خطاب کیا ۔آخر میں اجتماع گاہ سے شاہدرہ چوک تک تحفظ ختم نبوتؐ اور بحالی صوبہ بہاول پور ریلی نکالی گئی۔ ریلی سے میاں مقصود احمد ،ڈاکٹر سید وسیم اختر اور تحریک صوبہ بہاول پور کے مرکزی چیئر مین جام حضور بخش و دیگر نے خطاب کیا ۔

 

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس