Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حکومت پاکستان کو بھارت سے دوستانہ اور یارانہ بڑھانے کی بجائے کشمیری عوام کا ساتھ دینا چاہیے ۔ سینیٹرسراج الحق


لاہور 7اکتوبر 2017ء:امیر جماعت اسلامی پاکستا ن سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ انڈیا نے کشمیر پر غاصبانہ قبضہ کر رکھاہے اور آٹھ لاکھ بھارتی فوج کشمیریوں کا قتل عام کر رہی ہے ۔ بھارت کلبھوشن کی صورت میں اپنے تخریب کاروں کو پاکستان بھیج کرپاکستان کو دہشتگردی کا شکار کر رہاہے ۔ حکومت کو بھارت کے ساتھ معذرت خواہانہ رویہ چھوڑ کر پاکستانی عوام کی امنگوں کی ترجمانی کرنی چاہیے اور بھارت سے دوستانہ اور یارانہ کی بجائے کشمیری عوام کا ساتھ دینا چاہیے ۔ مقبوضہ کشمیر کے عوام نے حق خود ارادیت اور آزادی کے لیے بے پناہ قربانیاں دی ہیں ، لیکن ہمارے حکمرانوں کی طرف سے بھارت کے ساتھ دوستی کی باتوں نے ہمیشہ ان کے زخموں پر نمک پاشی کی اور تحریک آزادی کشمیر کو نقصان پہنچایا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے اسلام آباد میں جماعت اسلامی آزاد کشمیر کی شورٰی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر امیر جماعت اسلامی آزاد کشمیر ڈاکٹر خالد محمود بھی موجود تھے ۔ 

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ بھارت امریکہ کی شہ پر پاکستان کے خلاف اشتعال انگیز ی میں مصروف ہے ۔ ایل او سی پر روزانہ ہمارے شہری او رفوجی شہید ہورہے ہیں ۔ پاکستان کی طرف سے بھارت کو دندان شکن جواب دینا چاہیے ۔لاتوں کے بھوت باتوں سے نہیں مانتے ۔ پاکستان کی نرم پالیسی نے بھارت کو شیر بنادیا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ کشمیر پر بھارتی ریاستی دہشتگردی کو پوری دنیا میں اجاگر کرنا چاہیے ۔ بھارت دہشتگردی بھی کررہاہے اور اپنی سفارتی سرگرمیوں کی وجہ سے پاکستان کو دنیا بھر میں دہشتگرد ملک کے طور پر باور کرانے میں کسی حد تک کامیاب نظر آتا ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ حکومت کو عوام ، آئین پاکستان اور نظریہ پاکستان کی نمائندگی کرنی چاہیے ۔ جب افراد اور خاندان خود کو ریاست سے بالاتر سمجھنے لگتے ہیں تو معاملات خرابی کی طرف جاتے ہیں ۔ پاکستان ایک اسلامی ریاست ہے اور اس ریاست کے حکمرانوں کی کمٹمنٹ پاکستان اور اسلام کے ساتھ ہونی چاہیے ۔ جب ختم نبوت جیسے حساس ایشو کو خود حکومت کی طر ف سے چھیڑا جائے گا ، تو اس کے نتیجہ میں معاشرے میں انتشار پھیلے گا ۔ حکمران اکثریت کے جذبات کو مجروح کرنا چھوڑ دیں تو معاملات خود بخود سدھر جائیں گے ۔ حکومت نفرتوں اور تعصبات کو پروان چڑھا نے اور عوام کی آواز دبانے کے رویے سے اپنے لیے خود مشکلات پیدا کر رہی ہے ۔ کشمیر کی آزادی ہمارے ایمان کا حصہ ہے ۔ آزادی ¿ کشمیر ہماری وزارت خارجہ کا اولین ایجنڈا ہونا چاہیے ۔ کشمیری پاکستان کی تکمیل کی جنگ لڑ رہے ہیں ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستان اکیس کروڑ عاشقان رسول کا ملک ہے جب حکومت عوام کے دینی جذبات کا خیال نہیں کرے گی تو عوام کے اندر نفرت اور حکمرانوں کے خلاف غم و غصہ کا پھیلنا فطری امر ہے ۔ ختم نبوت کا مسئلہ انتہائی حساس ہے اس لیے حکومت کو نہ صرف اس پر قوم سے معافی مانگنی چاہیے بلکہ ذمہ داران کا تعین کر کے انہیں قرار واقعی سزا دی جائے تاکہ عوام کے غم و غصہ کو ٹھنڈا کیا جاسکے ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس