Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

حکمران عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مہنگائی اور ٹیکسوں کی مد میں تکلیف پہنچا رہے ہیں ۔ ذکر اللہ مجاہد


لاہور5اکتوبر2017ء: امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے کہا کہ حکمران عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مہنگائی اور ٹیکسوں کی مد میں تکلیف پہنچا رہے ہیں ۔ عوام پر بیک وقت بجلی اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میںاضافہ کر کے حکومت نے آئی ایم ایف کا وفادار ہونے کا ثبوت دیا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار گذشتہ روز انہوں نے این اے 130چوہدری منظور گجر کی طرف سے اہلیان علاقہ کے اعزاز میں ظہرانے سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر امیدوار این اے 130چوہدری منظور گجر ، صد ر الخدمت فاﺅنڈیشن لاہور عبدالعزیز عابد ، عمر حیات باجوہ ، عبد الواحد باجوہ ، ماسٹر اعجاز اور اہلیان علاقہ کی بڑی تعد اد نے شرکت کی ۔ انہوں نے کہا کہ شہر میں حکومت اور ضلعی انتظامیہ سمیت پرائس کنٹرول کمیٹیاں سبزیوں اور پھلوں کی گراں فروشی کنٹرول کرنے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے جس کا نقصان عوام کو مہنگی اشیاءضروریہ خرید کر اُٹھانا پڑ رہا ہے ۔ پرائس کنٹرول کمیٹیاں سستے داموں اشیائے خورد ونوش کی فراہمی یقینی بنانے کی بجائے کاغذی کاررائیوں میں مصروف ہے ۔ انہوں نے کہا کہ غریب اور سفید پوش عوام پہلے ہی مہنگائی کے ہاتھوں پریشان ہیں اب مہنگے ٹماٹر ، لیموں سمیت دیگر اشیاءخوردونوش کی قیمتیں آسمان پر پہنچ چکی ہیں، ایسے میںبجلی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ مزید مہنگائی کا طوفان برپا کر ے گا جس کا خمیازہ بھی عوام کو بھگتنا پڑے گا ۔انہوں نے مزید کہا کہ کمر توڑ مہنگائی سے عوام پہلے ہی بے حال ہیں ، غریب عوام کا چولہا  مہنگائی کی وجہ سے بجھ رہاہے اور لوگ خودکشیاں کرنے پر مجبور ہیں۔ حکومت کا عوام کے ساتھ کیسا انصاف ہے کہ عالمی منڈی میں تیل کی قیمتیں کم ہورہی ہیں لیکن پاکستان میں عوام کو اس کا ریلیف دینے کی بجائے مذید قیمتوں میں اضافہ کرنے کی روایت کو برقرار رکھا ہوا ہے۔ ذکر اللہ مجاہد نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر بجلی بلوں میں اضافہ اور ٹیکسوں کے خاتمے کے ساتھ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں  میں اضافہ کو واپس لیا جائے ، حکومت اگر عوام کو کوئی ریلیف نہیں دیتی تو تکلیف بھی نہ دے اور شہر بھر میں گراں فروشی کو کنٹرول کرنے کیلئے اہل افراد پر کمیٹیاں تشکیل دے جو اپنا کام ایماندار ی سے سرانجام دیں اور عوام کو روز مرہ کی اشیاءخورد و نوش کی خریدوفروخت میں ریلیف میسر ہو۔  

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس