Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

پنجاب یونیورسٹی لاء کالج کی سیٹوں میں کمی کر کے پرائیویٹ کالجزکو نوازا جا رہاہے


لاہور28ستمبر2017ء: پنجاب یونیورسٹی لاء کالج قدیم تعلیمی ادارہ ہے اس کی سیٹوں میں کمی کرنا لاء کالج کو تباہ کرنے کے مترادف ہے ان خیالات کا اظہا ر انیب افضل ناظم اسلامی جمعیت طلبہ جامعہ پنجاب علاقہ وسطی نے لاء کالج کے طلبہ و طالبات سے کیا ان کا مزید کہنا تھا کہ سیٹوں میں کمی کر کے پرائیویٹ کالجز کو نوازا جا رہا ہے جو ایک سوچی سمجھی سازش ہے ۔انیب کا کہنا تھا کہ اگر غریب طلبہ و طالبات کا استحصال بند نا کیا گیا تو ہم عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانے پر مجبور ہوں گے ۔اس موقع پر ربیع الرحمن ناظم اسلامی جمعیت طلبہ لاء کالج جامعہ پنجاب کا کہنا تھا کہ لاء کالج کی سیٹوں کی تعداد 700سے کم کر کے 370کر دی گئی ہے جبکہ اس سے ملحقہ پرائیویٹ تعلیمی ادارے لاکھوں میں فیسیں وصول کر رہے ان کی تعداد پنجاب یونیورسٹی لاء کالج کے برابر ہے جو کہ پنجاب یونیورسٹی لاء کالج کی اہمیت اور وقار کو ٹھیس پہنچا نے کے مترادف ہے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ لاء کالج کے پروفیسر وں کے اپنے ذاتی پرائیویٹ لاء کالجز ہیں جو لاکھوں میں فیسیں وصول کر رہے جب تک انتظامیہ میں ایسے افراد موجود رہیں گے لاء کالج کے تقدس کو ٹھیس پہنچتی رہے گی۔اس موقع پر طلبہ و طالبات نے مطالبہ کیا کہ پنجاب یونیورسٹی لاء کالج کی سیٹوں کو بحال کیا جائے اگر کمی کرنی ہے تو پرائیویٹ لاء کالجز کی سیٹوں میں کی جائے اور پرائیویٹ لاء کالجز کی فیسوں پر کڑی نگرانی کے ساتھ ساتھپرائیویٹ اداروں کی فیسوں کے لیے ضابطہ طے کیا جائے ۔طلبہ و طالبات کا مزید کہنا تھا کہ اگر سیٹوں کو بحال نہیں کیا گیا تو ہم لاء کالج میں تحریک بھی چلائیں گے اورعدالت کے دروازے پر بھی جائیں گے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس