Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حجاب کے نظام سے عورت کے تحفظ کے لیے کسی قانون یا تحریک کی ضرورت نہیں ۔حجاب گالا سے خطاب


لاہو ر26ستمبر2017ء: ( )اسلام انسانی زندگی کے لیے ایک مکمل ضابطہ حیات فراہم کر تا ہے ،جس کے رہنما اصول معاشرے کو امن و سکون ، خوشحالی اور تعمیر و ترقی کی شا ہراہ پر گامزن کر دیتے ہیں ۔حیا ء اور حجاب کے اصول بھی معاشرے میں اخلاق و کردار اور استحکام فراہم کر تے ہیں ،حجاب محض لباس کا ایک حصہ یا کپڑے کا ٹکرا نہیں ،بلکہ تہذیب کی علامت ہے اور ایک نظریہ ہے ۔یہ ایک مضبوط طرزِ فکر اور نظام ہے ۔ان خیالات کا اظہار سیکریٹری جنرل جماعت اسلامی حلقہ خواتین دردانہ صدیقی نے لاہور کے پرل کانٹی نینٹل ہوٹل میں منعقدہ حجاب گالا سے خطاب کر تے ہوئے کیا ۔انہوں نے مزید کہا کہ حجاب ایک ایسا نظر یہ فکر و عمل ہے جو اگر معاشرے میں موجود ہو تو عورت کے تحفظ کے لیے کسی قانون یا تحریک کی ضرورت نہ رہے ۔حجاب ایک رویہ بھی ہے اور اس کا اظہار بھی ۔اور یہ ایک ایسے نظام کی تشکیل ہے جو مرد اور عورت دونوں کے تحفظ کا ضامن ہے ۔انہوں نے کہا کہ ایک ایسا نظام جہاں ڈاکٹر عافیہ صدیقی ،برما و کشمیر ،شام ، بنگلہ دیش میں عورت محفوظ نہیں ہے ۔وہ ظلم و ستم کا شکار ہے تو پھر ایسے نظام کو بدلنے کی ضرورت ہے اور اس نظام کو تبدیل صرف جماعت اسلامی ہی کر سکتی ہے ۔جس کے پاس دیانت دار قیادت موجودہے اور جس کے پاس اسلامی و فلاحی پاکستان کا ایجنڈا موجود ہے ۔ ملک کے تما م دیانت دار اور اچھے لوگوں کو جماعت اسلامی کا ساتھ دینا چاہیئے ۔حجاب گالا میں بچیوں نے مختلف ممالک کے حجاب کو ٹیبلو کی شکل میں پیش کیا جبکہ مباحثہ اور مقابلہ مصوری کا بھی انعقاد کیا گیا ۔کامیاب طالبات کو اسناد اور انعامات سے نواز ا گیا ۔ اس مو قع پر ڈپٹی سیکریٹریز رانا فضل ،حمیرا خالد ،تسنیم معظم ،ناظمہ صوبہ عطیہ نثار اور ممتاز اسپیکر قاسم علی شاہ بھی موجود تھے ۔ علاوہ ازیں حجاب گالا کے حوالے سے معروف اینکر پرسن نادیہ مرزا نے ٹی وی ٹاک شو بھی کیا ۔ خواتین اور نوجوان طالبات کی کثیر تعداد نے تقریب میں شر کت کی ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس