Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

ملک میں سیاسی استحکام کے لیے اداروں کو اپنی حدود میں رہ کر کام کرنا ہوگا۔میاں مقصوداحمد


لاہور9 اگست 2017ء:امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصوداحمد نے کہاہے کہ سابق وزیر اعظم نوازشریف کاعدالتی فیصلے کے خلاف سڑکوں پر نکلنا سمجھ سے بالاتر ہے۔صاف ظاہر ہوتاہے کہ انہوں نے فیصلے کو دل سے تسلیم نہیں کیا۔یہ لمحہ فکریہ ہے ،اس سے ملک میں افراتفری اور انتشار بڑھے گا۔نوازشریف نے نادان دوستوں کے مشوروں پر عمل کرکے خود کو اور ملک وقوم کو نقصان پہنچایاہے اور اب بھی ان کا طرز عمل انصاف پسندجمہوری قوتوں کے لیے باعث تشویش ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزاسلامی جمعیت طلبہ کی تربیت گاہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ عدالتی فیصلے پر من وعن عمل درآمد کرکے ہی ملک میں سیاسی استحکام آئے گا۔اداروں کی آپس میں چپقلش کابراہ راست نقصان ملک وقوم کو ہوگا اوراس ساری صورتحال سے دشمنوں کو اپنی مذموم کارروائیاں کرنے میں آسانیاں ہوں گی۔انسانوں کی بستی میں عدالتوں سے لڑائی کسی کو بھی زیب نہیں دیتی۔کل تک سڑکیں بند کرنے والے ترقی کے دشمن تھے آج کیسے یہی عمل فائدہ مند ہوسکتاہے۔انہوں نے کہاکہ نوازشریف اللہ اور اللہ کے رسولؐ سے خانہ کعبہ میں بیٹھ کر کیے گئے وعدہ کو یاد کریں۔سود کی سرپرستی اور وفاقی شرعی عدالت کے سود کے متعلق فیصلے کے خلاف اپیل،عاشق رسولؐ ممتازقادری کو پھانسی اور اسلام کے نام پر حاصل ہونے والے پاکستان کو سیکولرازم پر چلانا بڑے گناہ ہیں اور یہ نوازشریف کے زوال اور گرفت کا باعث ہیں۔انہوں نے کہاکہ ضرورت اس امر کی ہے کہ سابق وزیر اعظم نوازشریف آرام سے بیٹھ کر اپنی ناکام پالیسیوں کاجائزہ لیں اور سڑکوں پر مارچ کرکے ملک میں بے یقینی کی کیفیت اور الزام تراشیوں کے ذریعے حالات کو مزید خراب نہ کریں۔انہوں نے مزیدکہاکہ حکمرانوں نے آئین کی شقوں63,62 کو چھیڑنے کی کوشش کی تو بھرپور دفاع کریں گے۔یہ شقیں اسلامی جمہوریہ پاکستان کے20کروڑ مسلمانوں کے نمائندوں کو پابند کرتی ہیں کہ وہ ہر لحاظ سے بے داغ اورسچے مسلمان ہوں۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس