Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

شوگر ملوں کی لوٹ مار کے خلاف سات اگست کو شوگر ملوں کے باہراحتجاجی مظاہرے کریں گے


لاہور 29جولائی 2017ء:  کسان بورڈ پاکستان کے مرکزی صدر چوہدری نثار احمد اور شوکت علی چدھڑ صدر کسان بورڈ پنجاب نے پناما لیکس کے تاریخی فیصلے کے بعد اپنے مرکزی دفتر میں منعقدہ ایک تقریب میں کسان بورڈ کے ایک مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے کہا کہ جس طرح ملک کو کرپٹ سیاستدانوں نے لوٹ لوٹ کر کنگال کر دیا ہے اسی طرح لٹیری شوگر ملوں نے گنے کے کاشتکاروں کے اربوں روپے دبا رکھے ہیں حکومت کی زراعت دشمن پالسیوں کی وجہ سے زراعت تباہ اور کسان دن بدن بدحال ھو رہا ھے کسانوں کو منڈیوں میں انکی زرعی اجناس کی مناسب قیمتیں نہ مل رہی ہیں.منڈیوں میں نہ صرف من مانی قیمتوں پر زرعی ادویات اور بیج فروخت کئے جا رہے ھیں بلکہ جعلی اور غیر معیاری ادویات کی بھرمار ھے.واپڈا نے اووبلنگ کرتے ہوئے زرعی ٹیوب ویلوں کے بل کسانوں کی برداشت سے باہر بھیج کر کسان کی کمر توڑ دی ہے.لینڈ ریکارڈ سنٹرز پر کرپٹ مافیا اور ٹاوئٹ ازم کا راج ہے.شوگر ملوں نے کسانوں کے اربوں روپے دبا رکھے ہیں مگر حکومت خاموش تماشی بنی ھوئی ہے اور کسان ذلیل و خوار ہو رھا ھے.اوکاڑہ میں بابا فرید شوگر مل اور پتوکی شوگر مل سمیت ملک بھر کی دیگر شوگر ملوں نے کسانوں کے اربوں روپے دبا رکھے ہیں۔ انہوں نے پناما لیکس کے سپریم کورٹ کے فیصلے کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے اسے لٹیروں اور کرپٹ لوگوں کے خلاف ایک سنگ میل قرار دیا اور سراج الحق کو اس فیصلے کا ہیرو قرار دیا۔انہوں نے کہا کہ ملک بھر کے کروڑوں کسان سراج الحق کی کرپشن کے خلاف مہم میں ہراول دستہ ثابت ہونگے کیونکہ کسان ہی سب سے زیادہ کرپشن کا شکار ہیں۔سب سے پہلے کسان بورڈ 7اگست کو شوگر ملوں کی عدم ادائیگیوں کے خلاف لٹیری شوگر ملوں کے خلاف احتجاجی دھرنے دیں گے اور یہ دھرنے اس وقت تک جاری رھیں گے جب تک کسانوں کو انکی رقوم نہیں مل جاتیں۔ان رہنماﺅں نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا کہ نواز شریف سمیت دیگر لٹیری شوگر ملوں کے کرپٹ مالکان سیاستدانوں کے خلاف بھی جے آئی ٹی بنائی جائے اور کاشتکاروں کو انکے واجبات دلائیں جائیں ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس