Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

معاشی ترقی کے لیے ملکی وسائل پر انحصارکرتے ہوئے عوام کو ریلیف فراہم کیاجائے


 لاہور15جولائی 2017ء: امیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمد نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف کاحکومتی پالیسیوں پر تشویش کااظہار لمحہ فکریہ ہے۔آئی ایم ایف نے2017کے لیے پاکستان کی معاشی رپورٹ حکومتی ناکام پالیسیوں کا پردہ چاک کردینے کے لیے کافی ہے۔پاکستان کی برآمدات میں اضافہ قابل مذمت ہے۔صحت وتعلیم کی صورتحال انتہائی مایوس کن ہے۔پاکستان میں50فیصد لوگ خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے پرمجبور ہیں۔بے رحم احتساب کے بغیر ملک کا مقدرنہیں سنواراجاسکتا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزعوامی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ ملک میں وسائل کی کمی نہیں مگر ان کو صحیح اور شفاف طریقے سے استعمال نہیں کیا جاتا۔کرپٹ حکمرانوں کے ٹولے کی لوٹ مار اپنے عروج پر پہنچ چکی ہے۔تعلیم وصحت کے شعبوں اور غربت کے خاتمے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرنے ہوں گے۔حکمرانوں کی ناقص حکمت عملی کے باعث عوام کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے۔ملک میں مسائل کے انبارلگے ہیں۔رہی سہی کسر لوڈشیڈنگ نے پوری کردی۔صنعتیں بند ہونے کی وجہ سے بے روزگاری میں اضافہ ہوگیا ہے۔قوم کو کسی قسم کاریلیف میسر نہیں۔معاشی ترقی کے لیے ملکی وسائل پر انحصار کرنا ہوگا۔انہوں نے کہاکہ حکمرانوں نے قوم پر قرضوں کے پہاڑ کھڑے کردیئے ہیں۔ہر شخص ایک لاکھ چوبیس ہزار روپے کامقروض ہوچکا ہے۔ٹیکس وصولیاں بڑھانے کے لیے مہنگائی کی چکی میں پسے عوام کی بجائے بڑے مگر مچھوں کے گرد گھیراتنگ کرنا ہوگا۔کرپشن سے پاک خود مختار معاشی پالیسیاں اختیار کرکے ہی ہم ملک کو ترقی یافتہ اور عوامی زندگی کو بہتر بناسکتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ملک میں دگرگوں سیاسی حالات کے باعث پیداہونے والی بحرانی کیفیت سے جلد ازجلد نجات حاصل کی جائے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس