Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

اہم خبریں

لینڈ ریکارڈ کمپیوٹر سنٹروں نے رشوت اور کسانوں کو ذلیل وخوار کرنے کے ریکارڈ توڑ ڈالے ہیں


لاہور7جولائی 2017ء:  کسان بورڈ پاکستان کی کور کمیٹی کا سہ ماہی اجلاس نائب امیر جماعت اسلامی میاں محمد اسلم  کی زیر صدارت منصورہ کمیٹی روم میںمنعقد ہوا  جس میں کسان بورڈ کے چاروں صوبوں کے صدور نے شرکت کی۔اجلاس کے بعد کسان بورڈ پاکستان کے مرکزی صدر چوہدری نثار احمدنے پریس بریفنگ دیتے کہا کہ ملک بھر میں شوگر مافیا ،کاٹن مافیا ، رائس مافیا ،آلو مافیا نے کسانوں کے اربوں روپے دبا رکھے ہیں ۔زراعت سے متعلقہ محکموں میں کرپشن اور رشوت کا بازار گرم کر رکھا ہے اور لینڈ ریکارڈ کمپیوٹر سنٹروں کے عملہ نے رشوت،انتقالوں میںفراڈ اور کسانوں کو ذلیل وخوار کرنے کے سابقہ تمام ریکارڈ توڑ ڈالے ہیں۔ قبضہ گروپوں کے ساتھ ساز باز ہو کر زمینوں کے فرضی اورجعلی انتقال کرنے اور ریکارڈ میںہیرا پھیری کرنے کے واقعات کی داستانیں صوبہ پنجاب بھر میں پھیلی ہوئی ہیں ۔اب پٹواریوں کو ختم کرکے جہاں ہزاروں خاندانوں کو فاقہ کشی کا شکار بنانے کا منصوبہ بنا لیا ہے وہاں سابقہ قیمتی زمینی ریکارڈ کو  غائب کر کے حکمران غریبوں کی زمینوں  کو ہڑپ کرنے کا منصوبہ بنایاجا رہا ہے ۔زرعی اجناس کی کم قیمتوں اور زرعی مداخل جیسے کھاد ، بیج ، کیڑے مار ادویات اور ڈیزل کی ہوش ربا قیمتوں کی وجہ سے زراعت گھاٹے کا سودا بن چکاہے ۔کاشتکاروں کو لوٹنا روز کا وطیرہ  بنا رکھا ہے۔کرپشن  کے نا سور نے نا صرف ستر فیصد زرعی آ بادی بلکہ ملک بھر کے دیگر تمام طبقات کو بھی کنگال بنا دیا ہے ۔ کسان بورڈ پاکستان مطالبہ کرتا ہے کہ گنے کی قیمت اڑھائی سو ،دھان کی اڑھائی ہزار اورکپاس کی قیمت ساڑھے چار ہزار روپے فی من مقرر کی جائے اور پٹواریوں کو چھٹی کرانے کی بجائے ہر پٹوار سرکل میں کمپیوٹرائزڈ سنٹربنائے جائیں۔ ملک بھر کے کروڑوں کسانوں کو کرپشن اور لوٹ مار سے بچانے کے لئے ملک میں کرپشن فری پاکستان کی مہم چلائی جائے گی ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس