Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

بجلی و پانی کے بحران اورمسائل کی ذمہ دارپیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم ہیں۔حافظ نعیم الرحمن


 کراچی14مئی 2017ء: امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ کراچی میں بجلی و پانی کے بحران اور دیگر عوامی مسائل کی ذمہ داری پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم پر عائد ہوتی ہے ، دونوں جماعتیں حکومت میں رہی ہیں ان کو اپنی ناکامی تسلیم کرنی چاہیئے ، ایم کیو ایم کے دیگر گروپوں کو بھی اس بات کا اعتراف کرنا چاہیئے کہ کراچی کی تباہی و بربادی میں وہ بھی شریک رہے ہیں ۔ گورنر سندھ کی جانب سے پیغام آیا ہے کہ 16مئی کو گورنر ہاؤس میں کے الیکٹرک کے حوالے سے ایک فالو اپ میٹنگ ہے ، ہمیں امید اور توقع ہے کہ گورنر سندھ کے الیکٹرک کو لوڈ شیڈنگ ، اوور بلنگ ختم کرنے پر مجبور کریں گے اور کے الیکٹرک کی انتظامیہ سے کہیں گے کہ شہریوں سے ناجائز طور پر وصول کیے گئے اربوں روپے کی واپسی کے لیے طریقہ کار طے کیا جائے ، گورنر اور وفاق سے اگر انصاف نہ ملا تو پھر ہم عوام کے حقوق کے لیے ہر ممکن طریقے اختیار کریں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کے روز جماعت اسلامی نارتھ ناظم آباد زون کے تحت سخی حسن تا فائیو اسٹار چورنگی کے الیکٹرک ،نادرا اور واٹر بورڈ کے خلاف منعقدہ احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ ریلی میں بڑی تعداد میں موٹر سائکلیں ، کاریں اور دیگر گاڑیاں شریک تھیں جبکہ قائدین کے لیے ایک بڑا ٹرک تیار کیا گیا تھا۔ ریلی کے شرکاء نے بڑے بڑے بینرز اور پلے کارڈز بھی اٹھائے ہوئے تھے جنہوں نے بجلی اور پانی کی عدم فراہمی اور قومی شناختی کارڈ کے حصول میں شہریوں کو درپیش دشواریوں اور پریشانیوں سے دوچار کرنے پرکے الیکٹرک ، واٹر بورڈ اور نادراکے خلاف زبردست نعرے بھی لگائے ۔ فائیو اسٹار چورنگی پر قائدین نے خطاب کیا ۔ریلی سے ضلع وسطی کے امیر منعم ظفر خان ، امیر زون اویس یاسین ، پبلک ایڈ کمیٹی نارتھ ناظم آباد زون کے صدر عبد الاحد فریدی اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔حافظ نعیم الرحمن نے احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ہم واٹر بورڈ اور نادرا کے اعلیٰ حکام سے بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ شہریوں کی تذلیل بند کی جائے ، ظلم ختم کیا جائے ، شہریوں کو پانی فراہم کیا جائے ۔ نادرا میگا سینٹر کا قیام خوش آئند ہے تاہم بند کیے گئے تمام نادرا دفاتر فی الفور کھولے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ میئر کراچی صبح شام اختیارات کا رونا رورہے ہیں لیکن جو اختیارات ان کے پاس ہیں اسے کیوں استعمال نہیں کرتے ، تقریبا 40ارب روپے کا بجٹ ان کے پاس ہے لیکن کہیں لگتا ہوا نظر نہیں آتا ، کراچی کو جو پانی ملتا ہے وہ آخر کہاں جاتا ہے ، عوام کو ٹینکر مافیا کے رحم وکرم پر کیوں چھوڑ دیا گیا ہے ۔ ایم کیو ایم نے واٹر بورڈ میں اپنے 9ہزار ورکرز بھرتی کروائے ان سے کام کیوں نہیں لیا جاتا ۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی نے کراچی میں اپنے ہر دور میں پانی کا مسئلہ حل کرنے کی کوشش کی ہے اور عملی اقدامات کیے ۔ عبد الستار افغانی کے دور میں حب ڈیم سے 100ملین گیلن پانی کی فراہمی شروع کی گئی ۔ نعمت اللہ خان کے دور میں K3منصوبہ شروع کرکے پایہ تکمیل تک پہنچایا گیا اور K4منصوبہ شروع کیاگیا لیکن ان کے بعد کی سٹی حکومت اور صوبائی حکومت نے 260ملین گیلن کے اس منصوبے کو تعطل کا شکار کردیا او ر عوام کو پانی سے محرو م کردیا گیا اگر یہ منصوبہ اپنے وقت پر مکمل ہوجاتا تو آج کراچی کے عوام پانی کے اس بحران کا شکار نہ ہوتے ۔منعم ظفر نے کہا کہ جماعت اسلامی دو سال سے کے الیکٹرک کے خلاف عملی جدوجہد میں مصروف ہے ۔ہم نے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ، نیپرا میں کراچی کے عوام کا مقدمہ لڑا ، قانونی جنگ لڑی اور سڑکوں پر بھی آئے ،لاٹھیاں اور گولی بھی کھائیں لیکن عوام کے حقوق کی جدوجہد سے دستبردار نہیں ہوئے اور نہ آئندہ ہوں گے عوام کے حقوق کی جنگ جاری رہے گی ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ نارتھ ناظم آباد کے لاکھوں مکینوں کے پانی کا مسئلہ فی الفور حل کیا جائے ۔ریلی میں شرکاء کی جانب سے کے الیکٹرک اور واٹر بورڈ کے خلاف زبردست نعرے لگائے گئے جن میں یہ نعرے شامل تھے ۔بجلی دو پانی دو عوام کو جینے دو ، پانی دو بجلی دو ورنہ کرسی چھوڑدو ، واٹربورڈ والو ں نارتھ ناظم آباد والوں پر ظلم بند کرو ،واٹربورڈ والو ں نارتھ ناظم آباد والوں کو پانی دو ، ختم کرو ختم کرو لوڈ شیڈنگ ختم کرو ، بند کرو بند کرو نادرا دفاتر میں عوام کی تذلیل بند کرو ، چور ہے چور ہے کے الیکٹرک چور ہے ، کے الیکٹرک حساب دو تانبہ چوروں حساب دو ، عوام کے اربوں روپے واپس کرو

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس