Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

حکمران اور سیکولر قوتیں نظام اسلام سے کھلا انحراف کر کے عوام اور نوجوانوں میں شدت اور عدم برداشت پھیلا رہے ہیں ۔لیاقت بلوچ


 لاہور 18اپریل 2017 ء: جماعت اسلامی پاکستان اور ملی یکجہتی کونسل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے منصورہ اور این اے 126میں علماءو مشائخ کے ساتھ نشست میں ولی خان یونیورسٹی مردان میں مشال خان کو وحشیانہ طریقہ سے قتل کرنے کے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہاہے لاقانونیت اور عدم برداشت کی انتہا ہے۔ اس المیہ کی وجہ سے پورا معاشرہ ان گنت سوالات اور تجزیوں میں مبتلا ہوگیا ہے ۔ فرد ، گروہ ، اداروں اور ریاست کو لاقانونیت کا کوئی حق حاصل نہیں ۔ قانون توڑنے والوں کے خلاف کاروائی فرد نہیں ریاست اور عدلیہ کا کام ہے ۔ توہین رسالت کے اقدام میں ہجوم نے فرد کو وحشیانہ طریقہ سے جان سے مارڈالا یہ تو کوئی مدرسہ اور دینی ادارہ نہیں تھا پھر یہ صورتحال کیوں پیدا ہوئی ؟
لیاقت بلوچ نے کہاکہ نظام تعلیم اور قومی سطح پر تعلیمی ادارے بے مقصد تعلیم کی وجہ سے ناکام ہو گئے ہیں ۔ پولیس ، انتظامیہ ، عدلیہ پر عام آدمی کا اعتماد ختم ہورہاہے ۔ پاکستان اسلامی نظریاتی ملک ہے عوام قرآن اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے والہانہ عشق اور محبت رکھتے ہیں ۔ حکمران اور سیکولر قوتیں نظام اسلام سے کھلا انحراف کر کے عوام اور نوجوانوں میں شدت اور عدم برداشت پھیلا رہے ہیں ۔ مسئلہ قانون کا نہیں ، حکمرانوں اور اداروں کی لاقانونیت کا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ چیف جسٹس آف پاکستان نے ولی خان یونیورسٹی واقعہ کا از خود نوٹس لے کر بروقت اور اچھا اقدام کیاہے اس وحشیانہ اور المناک واقعہ کے ذمہ داران کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے ۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس