Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

پاکستان کی سیاسی وعسکری قیادت داخلہ وخارجہ پالیسیوں کو ازسرنو تشکیل دے۔میاں مقصوداحمد


 لاہور18اپریل 2017ء: امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمد نے کہاہے کہ افغانستان میں قیام امن کے لئے پاکستان نے ہمیشہ اپنا مثبت کردار اداکیا ہے۔امریکہ خود افغانستان میں بدامنی پھیلانے کاذمہ دار ہے۔نائن الیون کے بعد امریکہ نے افغانستان پر قبضہ کرکے جنوبی ایشیا میں پراکسی وار کا آغاز کیا تھا۔اب امریکہ پاکستان پر جھوٹا اور بے بنیادالزام لگارہا ہے حالانکہ پاکستان نے افغانستان میں امن کے حوالے سے ہونے والے ہر قسم اور ہر سطح کے مذاکرات میں اہم کردار اداکیا ہے۔نئی امریکن انتظامیہ کو حقائق نہیں جھٹلانے چاہئیں۔جس دن افغانستان میں امریکی اور بھارتی عمل دخل ختم ہوجائے گا،جنوبی ایشیا میں بھی امن قائم ہوجائے گا۔انہوں نے کہاکہ مسئلہ کشمیر کو حل کروانے کے لیے امریکہ نے اگرچہ ثالثی کی پیشکش تو کی ہے مگر اس حوالے سے کبھی سنجیدہ اقدامات نہیں کیے۔اگر امریکہ واقعی مسئلہ کشمیر حل کروانے کے لیے مخلص ہے تو اسے ہندوستان پر دباؤڈالناچاہئے کہ وہ مقبوضہ کشمیر سے اپنی فوجیں نکالے،کشمیر یوں کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حق رائے شماری دے۔انہوں نے کہاکہ بھارتی فورسز نے مقبوضہ کشمیر میں مظالم کی انتہاکردی ہے۔کشمیریوں کو گاڑیوں کے سامنے باندھ کر گشت کرنا انسانیت کی تذلیل کرنے کے مترادف ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوزمظالم پر کبھی امریکہ نے مذمت کاایک جملہ تک نہیں کہا۔امریکہ کو مقبوضہ کشمیر میں ریاستی مظالم نظر کیوں نہیں آتے؟۔انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر کاایشوبھارت کے لیے وبال جان بن چکا ہے۔تحریک آزادی اپنے عروج پر ہے۔انڈیا اپنے تمام ترمظالم کے باوجود کشمیری مسلمانوں کے جذبہ حریت کوکچل نہیں سکا۔وہ وقت دور نہیں جب بھارت کو مقبوضہ کشمیر سے نکلنا ہوگا۔میاں مقصود احمد نے مزیدکہاکہ بھارتی جاسوس کل بھوشن کے معاملے پرہندوستان کااصل چہرہ دنیاکے سامنے بے نقاب ہوچکاہے۔پاکستان کی سیاسی وعسکری قیادت کو چاہئے کہ وہ داخلہ وخارجہ پالیسیوں کو ازسرنوتشکیل دے اور امریکی دباؤ سے آزاد خارجہ پالیسی مرتب کی جائے تاکہ خطے میں امن واستحکام قائم ہوسکے۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس