Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

لاپتہ افراد کی بازیابی کیلئے عدالتی احکامات پر عمل درآمد کو یقینی بنایاجائے۔میاں مقصوداحمد


 لاہور13 اپریل 2017ء: امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمدنے اسلام آباد ہائی کورٹ کے ریمارکس کہ’’9مئی تک لاپتہ افراد بازیاب نہ ہوئے تو خفیہ ایجنسیوں کے سربراہان اور پولیس کے خلاف مقدمہ درج کرائیں گے‘‘پر تبصرہ کرتے ہوئے کہاہے کہ لاپتہ افراد کامعاملہ سنگین صورتحال اختیار کرچکا ہے۔اس حوالے سے اسلام آباد ہائی کورٹ کے ریمارکس کاخیر مقدم کرتے ہیں۔ادارے ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرنے میں لیت ولعل سے کام لے رے ہیں جوکہ بگاڑ کاباعث بن سکتاہے۔ضرورت اس امر کی ہے کہ عدلیہ کااحترام کیاجائے اور تمام لاپتہ افراد کو بازیاب کراتے ہوئے عدالتی احکامات پر عمل درآمد کو یقینی بنایاجائے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں آئین وقانون کی بالادستی کو قائم کرتے ہوئے ایک دوسرے کوعزت دینا ہوگی۔لاپتہ افراد کامعاملہ ملک وقوم کی بدنامی کاسبب بن رہا ہے۔پوری دنیا میں ہماری جگ ہنسائی ہورہی ہے۔بغیر ثبوت محض شک کی بنیاد پر لوگوں کو اٹھاکر برسوں تک عقوبت خانوں میں ڈالنا تشویش ناک اور انسانی بنیادی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہاکہ اگر کسی شخص نے کوئی جرم کیا ہے تو اسے قانونی تقاضے پورے کرتے ہوئے انصاف کے کٹہرے میں لایاجائے اورقرارواقعی سزادی جائے۔ملک میں عدالتیں آزاد ہیں۔ملک سے جنگل کے قانون کاتاثر ختم ہونا چاہئے۔بغیر جرم ثابت کیے انسانی آزادی کو سلب کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔انہوں نے کہاکہ لاپتہ افرد کے لواحقین اپنے پیاروں کی ایک جھلک دیکھنے اور یہ جاننے کے لیے کہ وہ زندہ بھی ہیں کہ نہیں، دردرکی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں مگر کہیں بھی ان کی شنوائی نہیں ہورہی۔حکومت کی جانب سے اس معاملے میں بے حسی کامظاہرہ زخموں پر نمک چھڑنے کے مترادف ہے۔میاں مقصود احمد نے مزیدکہاکہ حکومت اور قانون نافذ کرنے والے تمام ادارے بنیادی انسانی حقوق کوملحوظ خاطر رکھتے ہوئے لاپتہ افراد کے حوالے سے قانونی تقاضوں کو پوراکریں تاکہ کسی بے گناہ کے ساتھ ظلم وزیادتی نہ ہو۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس