Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

قرآن اور سنت رسولؐ کی موجودگی میں کوئی نیابیانیہ بنانے کی ضرورت نہیں ہے۔ڈاکٹرمعراج الھدیٰ


 کراچی 19 مارچ 2017جماعت اسلامی سندھ کے امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے کہا ہے کہ وزیراعظم نواز شریف کا جامعہ نعیمیہ کا دورہ اور علماء سے دین کے معاملے میں نیا بیانیہ مرتب کرنے کیلئے فتویٰ جاری کرنے کا مطالبہ مضحکہ خیز ہے،قرآن اور سنت رسولؐ کی موجودگی میں کوئی نیابیانیہ بنانے کی ضرورت نہیں ہے۔پاکستان میں تمام قوانین قرآن وحدیث کے ماتحت ہونا چاہئے جس پر عمل نہیں ہورہا اور معاشرہ روز بروز بگاڑ کی جانب گامزن ہے، قرآن مجید کے سانچے میں ترتیب پانے والے کرداروں سے ہی دین کی دعوت پھیلے گی۔قرآن وسنت میں عام انسانوں کیلئے جس عدل ،انصاف،ترقی، تحفظ اورروزگارسمیت بنیادی حقوق کاوعدہ ہے،پاکستان کا عام آدمی اس سے یکسر محروم ہے،آج کے حکمران قرآن وسنت پر عمل سے دور ہیں جسکی سزا پاکستان کے عوام بھگت رہے ہیں۔ جدید ٹیکنالوجی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے دین کی ترویج اور دعوت کو مؤثر بنانے کیلئے بھرپور طریقے سے استعمال کرنے کی اشد ضرورت ہے،جماعت اسلامی ایک مؤثر تنظیم کا نام ہے ،مؤثر تنظیم ،توانا اور مضبوط تنظیم سازی سے جماعت بھی مضبوط ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قباء آڈیٹوریم میں صوبائی امراء کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ا س موقع پر جماعت اسلامی سندھ کے جنرل سیکریٹری ممتاز حسین سہتو، نائب امراء محمد حسین محنتی، عبدالغفار عمر، حافظ نصراللہ عزیز، پروفیسر نظام الدین میمن، نائب قیمین عبدالوحید قریشی، عبدالحفیظ بجارانی،نواب مجاہد لغاری ودیگر بھی موجود تھے۔ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے مزید کہا کہ اقلیتوں کے جان، مال ،عزت وآبرو اور مذہبی مقات کی حفاظت کرنا ہم سب کی ذمہ داری ہے لیکن ریاست اپنی ذمہ داریوں، اللہ کے بتائے ہوئے بنیادی اصولوں کو بھول چکی ہے،معاشرے میں مضبوط سیرت اور کردار کے حامل افراد ہی انقلاب برپا کرتے ہیں۔ جماعت اسلامی کی خوشحال پاکستان فنڈ مہم کے ذریعے انشاء اللہ پاکستان کو اسلامی پاکستان بنانے کیلئے ہر ممکن کوشش کریں گے۔اپریل میں دعوتی مہم اوریوتھ ممبر شپ مہم چلائی جائے گی ،معاشرے میں موجود آبادی کی اکثریت نوجوانوں پر مشتمل ہے جنہیں اپنے ساتھ جوڑنے، جماعت اسلامی کے ساتھ چلانے ،نوجوانوں کو دین کو نافذ کرنے کیلئے تیار کرنا اور نظم جماعت کو طاقتو ر بنانے کیلئے اپنی جدوجہدکو مزید تیز کرنا ہوگا۔ انتخابی نتائج حاصل کرنے کیلئے ہمیں اپنے کام میں مزید نکھار پیدا کرنا ہوگا، اللہ کی رحمت سے مایوس ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ہے،پیپر ورک اور فیلڈ ورک میں یکسوئی پیدا کرنے کیلئے اپنی محنتو میں مزید نکھار لانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں مردم شماری کو صاف شفاف اور غیر متنازعہ بنانے کیلئے تمام فریقوں کے خدشات کو دور کیا جانا انتہائی ضروری ہے، جماعت اسلامی کے کارکنان مردم شماری میں بھرپور حصہ لیں اورکوشش کی جائے کہ کوئی بھی فرد مردم شماری اور خانہ شماری میں اندراج سے محروم نہ ہوجائے

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس