Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

نومنتخب مجلس شوری کے افتتاحی اجلاس کی رپورٹ

بخدمت امرائے صوبہ ،حلقہ ، اضلاع، زون اور مقامی جماعت اسلامی پاکستان
بخدمت قیمہ ،ناظمات صوبہ اور اضلاع حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان
بخدمت ذمہ داران برادر تنظیمات جماعت اسلامی پاکستان
بخدمت مرکزی ذمہ داران جماعت اسلامی پاکستان

السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ!
اُمید ہے آپ خیریت سے ہوں گے ۔
جماعت اسلامی پاکستان کی نومنتخب مرکزی مجلس شوریٰ کا افتتاحی اور معمول کا سالانہ اجلاس 11تا13ربیع الثانی1434ھ بمطابق 22تا24فروری 2013 ءمحترم امیرجماعت اسلامی پاکستان سیدمنورحسن صاحب کی زیر صدارت منصورہ لاہور میں منعقد ہوا ۔ جس میں طے شدہ ایجنڈے کے مطابق کاروائی مکمل کی گئی ۔ ذیل میں شوریٰ کے فیصلے اور اہم اُمور آپ کے علم واطلاع اور عمل درآمد کے لیے پیش کیے جارہے ہیں ۔ اُمید ہے کہ آپ تمام ارکان و کارکنان جماعت اور ممبران تک ان کی ترسیل کا بھی اہتمام فرمائیں گے۔
٭۔ تلاوت قرآن کریم کے بعد نومنتخب اراکین مجلس شوریٰ نے حلف رکنیت مجلس شوریٰ لیا۔ نائب امرائے جماعت چوہدری محمد اسلم سلیمی صاحب ، ڈاکٹرمحمدکمال صاحب ،سراج الحق صاحب ،امرائے صوبہ جات پروفیسر محمدابراہیم صاحب ،عبدالمتین اخوندزادہ صاحب ،ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی صاحب اور ڈاکٹر سید وسیم اختر صاحب اور لیاقت بلوچ قیم جماعت اسلامی نے بربنائے منصب رکنیت مجلس شوریٰ کا حلف اٹھایا۔
٭۔ اوقات کار کے لیے طے ہواکہ اجلاس مجلس شوریٰ صبح10:00بجے سے رات10:00بجے تک معمول کے وقفوں کے ساتھ جاری رہے گا۔
٭ مرحومین کے لیے دعائے مغفرت کی گئی ۔
٭ محترم امیرجماعت نے اجلاس کے لیے نائب امرائے جماعت چوہدری محمد اسلم سلیمی صاحب ،ڈاکٹر محمد کمال صاحب اور سراج الحق صاحب کو متبادل صدور مقرر کیا۔
٭ محترم امیرجماعت نے نومنتخب اراکین مرکزی مجلس شوریٰ کے لیے استقامت کی دعا کرائی ۔
٭ پروفیسر خورشید احمد صاحب (بوجہ علالت )،نصراللہ خاں شجیع صاحب ،فاروق نعمت اللہ صاحب (بوجہ رخصت )عبدالوحید قریشی صاحب ، پروفیسرمحمدوقاص صاحب (بوجہ ادائیگی عمرہ )شریک اجلاس نہ ہوسکے ۔
٭۔ خالد رحمن صاحب نائب قیم جماعت نے مرکزی مجلس شوریٰ کے سابقہ اجلاس مورخہ 10/9جنوری 2013ءکی کاروائی توثیق کے لیے پیش کی جس کی اجلاس نے توثیق کی ۔
٭۔ محترم امیرجماعت نے حمد وثناءکے بعد اپنے افتتاحی خطاب میں نئی منتخب شوریٰ کو خوش آمدید کہا اور دعا کی کہ اللہ تعالیٰ مجلس شوریٰ کو اپنی ذمہ داریاں بطریق احسن ادا کرنے کی توفیق بخشے ،آمین۔
٭ محترم امیرجماعت نے مزید فرمایا :۔
اجتماع ارکان کے بعد مجلس شوریٰ دستوری اعتبار سے جماعت کا سب سے بڑا اور اہم ادارہ ہے۔ رکن مجلس کی حیثیت میں جوذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں اُن کی تذکیر دستوری تقاضا بھی ہے اور اس کی اہمیت بھی مسلّم ہے۔عہد و پیمان کی اہمیت کسی سے پوشیدہ نہیںہے۔ حلف کے دوران اللہ تعالیٰ سے عہد وپیمان کی بار بار تذکیر ہوئی ہے ۔ حلف میں اطاعت و وفاداری کے الفاظ باربار استعمال ہوئے ہیں۔ جس کا واضح مفہوم یہ ہے کہ اطاعت بسا اوقات محض ظاہری ہوسکتی ہے۔ جبکہ مطلوب دل و دماغ کی پوری یکسوئی کے ساتھ اطاعت ہے۔ جو وفاداری کے بغیر ممکن نہیں ہے۔ دستور کے چند آخری صفحات میں مجلس شوریٰ کے قواعد و ضوابط دیئے گئے ہیں ان کی تذکیر از حد ضرور ی ہے تاکہ ہر وقت ذہن میں مستحضر ہوں۔
موجودہ حالات میں بڑھتی ہوئی دہشت گردی نے ہر ایک کو تشویش میں مبتلا کردیا ہے۔ بظاہر اسے فرقہ واریت کا عنوان دیا جاتاہے تاہم اسے مجموعی حالات کے تناظر میں دیکھنا چاہیے۔ کوئٹہ کے سانحہ کی ٹائمنگ کو اگر پیش نظر رکھا جائے تو یہ گوادر پورٹ کو چین کے حوالے کرنے سے اور ایران کے ساتھ گیس پائپ لائن کے معاہدہ پر اتفاق سے جڑی ہوئی ہے۔ درحقیقت امریکی مداخلت خطہ میں اور پاکستان کے معاملات میں مسلسل بڑھ رہی ہے اور اس حوالے سے امریکہ عملاً پاکستان اور پاکستانی عوام کے جذبات کو کسی درجہ میں اہمیت دینے کے لئے تیار نظر نہیں آتا۔ اس تناظر میں ایک آزاد خارجہ پالیسی تشکیل دینے کی ضرورت ہے۔اس تسلسل میں یہ خدشات بھی موجود ہیں کہ امریکہ پاکستان کے انتخابی نتائج کو بھی متاثر کرنے کی کوشش کرے گا تاکہ 2014ءکے بعد کے حالات میں اپنے ایجنڈے کی تکمیل کے لئے ایک کمزور حکومت سے معاملہ طے کرنے میں اسے آسانی ہو۔ انتخابات کے ضمن میں جو کام ہمیں اپنے لئے کرناہے وہ کوئی اور نہیں کرسکتا۔ اپنے منشور اور اپنی سابقہ کارکردگی بالخصوص خدمت کے میدان میں کارکردگی اور اپنی امانت و دیانت کو بنیاد بنا کر اپنے پیغام اور نام کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔
٭ قیم جماعت نے مرکزی مجلس شوریٰ منعقدہ 10/9جنوری 2013ءکے فیصلوں پر عمل درآمد کا جائزہ پیش کیا۔
۔ امور خارجہ قائمہ کمیٹی کااجلاس توہوگیاتھا توجہ دلا دی تھی ۔
۔ MYCکے حوالہ سے امیرجماعت کی صدارت سیاسی مشاورت کرلی گئی تھی ۔
۔ انتخابی حکمت عملی کے فیصلہ کے بعد امیرجماعت کی صدارت وسیع مشاورتی اجلاس منعقد ہوگیاتھا۔ صوبوں کے سپرد کام کیاگیا کہ وہ اپنے حالات کے مطابق سفارشات تیار کریں،ہوم ورک ہر پہلو سے مکمل کریں ،فیصلہ مرکزی پارلیمانی بورڈ کرے گا۔
۔ مالیاتی کمیٹی کے ساتھ نشست بسلسلہ کے ایس ایس امورپرنہیں ہوسکی ۔یہ نشست اب کرلی جائے گی ۔
۔ تعلیمی کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوگیا۔
۔ انتخابی نشان ترازو الاٹ ہوگیا ،نئی درخواست معمول کی کاروائی ہے۔
٭ قیم جماعت نے جماعت کے کام کی سالانہ رپورٹ ملٹی میڈیا کی مدد سے پیش کی اور سوالات کے جوابات دیئے۔
افرادی قوت: ارکان: 30,477 امیدواران: 11,663 کارکنان: 1,60,954 ممبران: 51,94,141

٭ ارکان جماعت میں کمی اور زائد المیعاد امیدواران رکنیت کے بارے میں امرائے صوبہ نے رپورٹ پیش کی ۔
صوبہ پنجاب میں 21ارکان،صوبہ سندھ میں 29ارکان،صوبہ خیبر پختونخواہ میں 76ارکان اور صوبہ بلوچستان میں 15ارکان کی بوجوہ کمی ہوئی۔
٭ منصوبہ عمل پر عمل درآمد کا جائزہ قیمین صوبہ نے پیش کیا۔
٭ سید حفیظ اللہ صاحب آڈیٹر جماعت اسلامی پاکستان نے آڈٹ رپورٹ بابت سال 2011ءمرکزی مجلس شوریٰ میں پیش کی۔ناظم مالیات بشیر احمد عارف صاحب نے آڈٹ رپورٹ میں اٹھائے گئے نکات کی وضاحت کی ۔ اصلاح طلب اُمور اور قابل عمل تجاویز پر عمل درآمد کی یقین دہانی بھی کرائی ۔
٭۔ آئندہ مالی سال 2012ءکے آڈٹ کے لیے سید حفیظ اللہ صاحب کو آڈیٹر مقرر کیاگیااور ان کی خدمات و کام کی بھرپور تحسین کی گئی ۔
٭ مرکزی تربیت گاہ میں کارکنان کی شرکت کے حوالہ سے محترم امیرجماعت نے صوبہ خیبر پختونخواہ اور بلوچستان کی تحسین فرمائی اور متوجہ کیا کہ دیگر صوبہ جات بھی بڑی تعداد میں اس طرح ڈسپلن کے ساتھ اپنے کارکنان کی شرکت کا اہتمام کرلیں اورمرکزی تربیت گاہ میں کراچی سے بہت کم شرکت ہوئی جو باعث تشویش ہے حلقہ اور اضلاع کے نظم متوجہ ہوں۔
٭ منصوبہ عمل برائے سال 2013ءایک روز قبل ہی اراکین مجلس میں تقسیم کردیا گیاتھا۔ سراج الحق صاحب صدر منصوبہ کمیٹی نے رسمی طور پر منصوبہ عمل مجلس میں پیش کیا۔ اراکین مجلس نے شق وار تمام نکات پر بحث کی ۔ بحث ومباحثہ کے بعد کچھ کمی بیشی کے ساتھ اس کی منظوری دی گئی ۔
٭ ڈاکٹر فرید احمد پراچہ صاحب نائب قیم جماعت نے مرکزی مجلس شوریٰ کی مقرر کردہ کمیٹیوں کے اجلاس کی سالانہ جائزہ رپورٹ پیش کی ۔
٭ الیکشن فنڈ کے ضمن میں طے پایا کہ صوبہ جات اور حلقہ خواتین پردرج ذیل تفصیل کے مطابق الیکشن فنڈ عائد کیا جائے گا جبکہ فی رکن مبلغ دس ہزار روپے الیکشن فنڈ جمع کروایا جائے گا۔
پنجاب : 10کروڑ روپے             سندھ : 5کروڑروپے                     بلوچستان : 1کروڑروپے                       خیبر پختونخواہ:2کروڑ روپے           خواتین: 5کروڑروپے
٭ مجلس شوریٰ کی تین سال کی مدت کے لیے کمیٹیوں کی تشکیل دی گئیں ۔ (تفصیل بعد میں جاری کردی جائے گی )
٭۔قیم جماعت نے محترم امیرجماعت کی طرف سے نامزد کردہ مرکزی مجلس عاملہ کے ارکان کے نام پیش کئے ۔
پنجاب :
1۔ڈاکٹر سید وسیم اختر صاحب 2۔میاں مقصود احمد صاحب 3۔میاں محمد اسلم صاحب
4۔سجاد احمد عباسی صاحب 5۔حافظ سلمان بٹ صاحب 6۔ڈاکٹر سید احسان اللہ شاہ صاحب
صوبہ خیبرپختونخواہ:
7۔ پروفیسر محمدابراہیم صاحب 8۔ڈاکٹر محمداقبال خلیل صاحب 9۔ڈاکٹر عطاءالرحمن صاحب 10۔ سید بختیار معانی صاحب
صوبہ سندھ :
11۔ ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی صاحب 12۔محمد حسین محنتی صاحب 13۔حافظ نعیم الرحمن صاحب 14۔حافظ لطف اللہ بھٹو صاحب
صوبہ بلوچستان :
15۔ عبدالمتین اخوندزادہ صاحب
٭۔انتخابات کے حوالہ سے ارکان شوریٰ کی طرف سے سیر حاصل گفتگو ہوئی جس کے نتیجہ میں مرکزی مجلس شوریٰ کے فیصلے کی ایک مرتبہ پھر توثیق ہوئی کہ جماعت اگلے انتخابات میں اپنے پرچم اور نشان کی بنیاد پر الیکشن لڑے گی ۔ تاہم سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے راستے کھلے ہیںاور صوبائی نظم اس حوالے سے اپنا ہوم ورک مکمل کرے گا۔
٭۔ اختتامی خطاب محترم امیرجماعت!
اجلاس کے آغاز میں کئے جانے والے حلف کی پاسداری ہم سب نے کرنی ہے ۔ طالبان نے ہمیں مذاکرات کا حصہ بنانے کی جو بات کی تھی ۔ اگر یہ پیشکش اور مذاکرات امن کے لئے ہوں تو ہم اس عمل کو آگے بڑھانے کا خیر مقدم کریں گے۔
جماعت اسلامی کو ایک علمی اور دینی تحریک کا بھرپور تشخص دینے کے لئے ہمیں بھرپورکردار ادا کرنا ہوگا۔ اگلے انتخابات میں اپنے پرچم اور نشان کی بنیاد پر الیکشن میں جانے کا فیصلہ انتہائی اہم ہے۔ اس فیصلہ کے حوالہ سے الحمد للہ ہر سطح پر اب یکسوئی پائی جاتی ہے۔ اب صوبہ جات اور اضلاع کے ہوم ورک کی انتہائی اہمیت ہوگی اور اسی بنیاد پر مزید فیصلے کئے جاسکیں گے۔ الیکشن فنڈ کی اہمیت کے پیش نظر اسے خصوصی اہمیت کے ساتھ توجہ دینی ہوگی ۔ رات 7:25پر محترم امیرجماعت کی دعا سے اجلاس کا اختتام ہوا۔
٭۔ مرکزی مجلس شوریٰ کے اجلاس میں 13مختلف موضوعات پر قرار دادیں پیش کی گئیں ۔ قراردوں کے مکمل متن روزنامہ جسارت اور ہفت روزہ ایشیا میں شائع کئے جارہے ہیں۔ توقع ہے ارکان و کارکنان پالیسی اُمور پر جماعت کی سوچ اور فیصلوں سے آگاہی کے لئے قرار دادوں سے بھرپور استفادہ کریں گے اور انہیں زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کا بھی اہتمام کریں گے۔ ان قرار دادوں کو متعلقہ محکموں اور اداروں تک بھی پہنچایا جائے گا۔
دعاہے کہ اللہ تعالیٰ ہمارے فیصلوں میں برکت عطا فرمائے ،انہیں ملک و قوم اور جماعت کے لئے سود مند بنائے اور ہم سب کو ان پر عمل درآمد کی توفیق مرحمت فرمائے ، آمین۔


والسلام
خاکسار
(لیاقت بلوچ)
قیم جماعت اسلامی پاکستان

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس