Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

یکساں نظام تعلیم


ہم ملک میں نظریہ پاکستان سے آہنگ اسلامی نظام تعلیم نافذ کریں گے اور ایک مستقل قومی تعلیمی پالیسی کے ذریعہ سرکاری و پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے لیے یکساں نظام تعلیم رائج کیا جائے گااور انٹرمیڈیٹ تک دینی و دنیاوی تعلیم کے امتزاج سے ایسا نصاب تعلیم تشکیل دیا جائے گا۔ جس کے تحت قرآن و حدیث کی تعلیم ہر طالب علم کے لیے لازمی ہو۔ اور دینی مدارس کے طلبہ کو انگریزی ، ریاضی و دیگر علوم کی تعلیم دی جائے۔

-        اُردو کے ذریعہ تعلیم بنانے کے ساتھ ساتھ تمام صوبائی اور علاقائی زبانوں کو ترقی کے بھرپور مواقع فراہم کئے جائیں گے۔

-        فنی تعلیم پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔

-        اعلیٰ و پیشہ ورانہ تعلیم کے اداروں میں غریب گھرانوں کے میرٹ پر آنے والے طلبہ و طالبات کے تمام اخراجات حکومت برداشت کرے گی۔

-        پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی مکمل حوصلہ افزائی کی جائے گی تاہم نصابِ تعلیم ،فیسوں اور معیار تعلیم کے سلسلہ میں قابل عمل اور متوازن قانون سازی کی جائے گی۔

-        شرح خواندگی کو 5 سال میں100 فیصد کریں گے۔ میٹرک تک تعلیم مفت اور لازمی ہوگی۔

-        ایسی پالیسی بنائی جائے گی جس کے تحت ہر اُستاد ریٹائرمنٹ کے بعد ذاتی مکان کا ملک ہو۔

-        طلبہ یونینز بحال کی جائیں گی۔

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس