Jamaat-e-Islami Pakistan | English |

مذاکرات،مذاکرات اور صرف مذاکرات

  1. لاہور مںن علماءمشائخ کانفرنس طالبان کمیے کے سربراہ کے زیر قا دت اہتمام قائم کی گئی اس کانفرنس مںا ۲۳ سے زائدجماعتں شریک ہوئںگ اس کے اعلامہم مںک کہا گاہ کہ ہم علماءسااسی پارٹااں،مشائخ، سول سوسائٹی،حکومت،طالبان اور مڈ یا سے امدل رکھتے ہںی کہ سب مل کر مذاکرات مںھ حائل رکاوٹںں ختم کریں گے پارلمنٹش اور اے پی سی کی سفارشات پرعمل کریں گے اس غر ملکی جنگ سے ملک کو نکالںق گے قرآن کہتا ہے ایک انسان کا قتل ساری انسانتع کا قتل ہے سب سے گذارش ہے ملک کو نارِ نمرود سے بچائیںفرینفر رکاوٹ نہ پد ا ہونے دیں کمی س کے سربراہ مولانا سمعر الحق نے کانفرنس کے اختتام پریہ ا علامہب پڑھ کر سنایا جس مںا حکومت اور طالبان سے اللہ اور رسول کے نام پر فوری جنگ بندی کی اپلر کی گئی ہے۔اس سے قبل وفاق ا لمدارس نے ملک کے تمام علماءکو جمع کر اللہ کا واسطہ دے کر دونوں فرینال سے جنگ بندی کا کہا تھا۔جماعت اسلامی کے امری سدی منور حسن نے مذاکرات کی ناکامی کے باوجود فوجی آپریشن نہ کرنے کی درخواست کی ہے ان کے مطابق اس طرح کہہ کر وہ افواج پاکستان کی حمایت کرتے ہںا کولنکہ فوج کو اپنے ہی شہریوں سے الجا دیا گاج ہے نقصان کسی فریق کا بھی ہو نقصان پاکستان کا ہے نقصان امت مسلمہ کا ہے اس وقت یہ تجزیے نہںت کرنے چاہے کہ کون قصوروار ہے اور کون قصوروار نہںن اس وقت ایک ہی ایجنڈا ہونا چاہے کہ ہر حالت مںی مذاکرات ہوں اور کسی فصلے پر پہنچا جائے دونوں طرف سے خون خرابے سے اجتناب کرنا وقت کی ضرورت ہے یہاں تک طالبان کی شریعت کے نفاذ کی بات ہے وہ ہر موقعے پر کہہ چکے ہںک بم دھماکوں اور خود کش حملوں سے شریعت نافذ نہںا ہو سکتی شریعت پرامن طریقے سے ہی نافذ ہو سکتی ہے اور ملک میںامن بھی جٹ طااروں کی بمباری اورٹنکواں کی گولہ باری سے امن قائم نہںے ہو سکتا اس لےت اس طاقت کا استعمال نہںر کرنا چاہےم۔ قائد حزب اختلاف اور پپلز پارٹی کے رہنماءخورشد شاہ نے کہا ہے دہشت گردی کے بعد مذاکرات کی افادیت ختم ہوئی ہے نواز شریف کو لڈقر بن کر سوچنا ہو گا حکومت کی کمزور پوزیشن کی وجہ سے نقصان پہنچ رہا ہے۔بلاول کی زبانی کہ وہ وحشی درندوں کا قانون نہںر مانتے دمادم مست قلندر ہو گا ہمںن شریعت نہ بتائںب ہمںگ معلوم ہے ۔جو شریعت وہ جانتے ہیںاس کا مظاہرہ وہ سندھ ثقافتی پروگرام مں کر چکے ہںں اور ان کی تو پوری زندگی ہی شریعت کے مطابق ہے اگر ان جسےا نوجوانوں کو قوم کا لڈشر مان لات گاس تو وہ اپنے نانا کے دور حکومت مںک منظور ہونے والے اسلامی آئنچ کی تشریع اسی طرح کریں گے اس بہتر سے باین تو زرداری صاحب کا ہے۔پی پی پی کے سابق وزیر داخلہ کہتے ہےں حکومتی کمیت بننے سے طالبان کی اہمتم بڑھی ہے اس مسئلے کا ایک ہی حل آپریشن ہے ۔عمران خان نے کہا پی پی پی ،ایم کو ایم اور عوامی نشنل پارٹی اب آپریشن پر زور دے رہے ہںن انہوں نے اپنے دور مںو شمالی وزیرستان میںآ پریشن کووں نہںا کا ۔مولانا فضل ا لرحٰمان تو ہر حکومت کے ساتھ ہوتے ہں وہ مشرف، پی پی پی اور اب ن لگل کے ساتھ ہیںحکومت پہلے بھی آپریشن کر کے دیکھ چکی ہے اس سے قبل ۹۱ ٓپریشن ہو چکے ہںد جس مں ۲ شمالی وزیرستان مںس کئے گئے۔
    صاحبو!اس مںئ شک کی کوئی گنجائش نہںی نواز شریف مذاکرات مںن مخلص ہںچ اور کہہ چکے ہںم حکومت اور فوج ایک ہی پچ پر ہںں لکنت ساتھ ہی ساتھ انہوں نے فرمایا ہے کہ کراچی اور مہمند جسےز حملوں سے مذاکرات کو دھچکہ لگا ہے اور مذاکرات کو سبوتاژکام گای ہے حالہر حملوں پر طالبان نے اپنے موئقف مںک کہا ہے کہ ہمارے لوگوں کو فورسزقتل کر رہی ہںم اس لے ہم نے بھی کراچی مںا کاروائی کی ہے کراچی مںر ہمارے ۱۲ افراد کو قتل کاک گاو ہے پشاور مںھ ۰۱ افراد کو قتل کاد گای اس پر کراچی مںن ہم نے پولسم وین پر حملہ کاب ملک مںو دوسری کاروائوصں سے ہمارا کوئی تعلق نہںے ہے۔ ادھر عسکری حکام کا کہنا ہے زیرحراست دہشتگردوں کے قتل کا الزام بے بنا د ہے یہ بات چل رہی تھی کہ مہمند ایینس مںن ایف سی کے ۳۲مغوی اہلکاروں کو قتل کر کے مذاکرات کو ڈیل ریل کرنے کے لےد ایک اور گھناونی کوشش کی گئی ہے جس کی جتنی بھی مزاحمت کی جائے کم ہے۔ اس واقعے پرحکومتی کمیر نے طالبان کمیمم سے طے شدہ مٹنگ مںا شمولتل سے انکار کر کے مذاکرات کو زیادہ مشکل بنا دیا ہے دس سال سے زیادہ جاری جنگ کو فوراً ختم ہونے کے خواب دیکھنے والے حقائق کی دنال سے باہر ہںب طالبان نے پاکستان کے آئنے کے تحت مذاکرات مںک شرکت کا مان کر اچھی بات کی تھی اگر دونوں فریق پر پوئنٹ اسکور کرنے کا الزام لگ جائے تو کسی طرح بھی مناسب نہںں دونوں فریق بالغ نظری کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس آگ کو بجھا دیں تو یہ تارییا کاماںبی ہو گی۔
    قارئن !قوم کو اس وقت اس بعث مںک نہںا پڑنا چاہےخ ہے کہ کس کی غلطی ہے اور کس کی نہںط! تاریخ اُٹھا کر دیکھ لیںہر لڑائی آخر مذاکرات پر ہی ختم ہوئی ہے اس لےت وطن سے محبت کرنے والے حلقے مذاکرات ،مذاکرات اور صرف مذاکرات پر ہی اس مسئلے کے حل پر ینیک رکھتے ہں اللہ سے دعاءکہ وہ اس مملکت اسلامی جمہوریہ پاکستان کو دشمنوں کی سازشوں کی وجہ سے برپاہ اس جنگ سے نکالے آمنی۔
     

 
 
 
 
     ^واپس اوپر جائیں









سوشل میڈیا لنکس